اسلام آباد ہائی کورٹ نے فردوس عاشق اعوان اور غلام سرور خان کو معاف کر دیا 

  اسلام آباد ہائی کورٹ نے فردوس عاشق اعوان اور غلام سرور خان کو معاف کر دیا 

  



اسلام آباد (سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) اسلام آباد ہائی کورٹ نے معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان اور وزیر ہوا بازی غلام سرور خان کو توہین عدالت کیس میں معاف کر دیا۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا ہمیں کوئی شک نہیں تھا آپ دونوں نے توہین عدالت کی ہے، اس سب کے باوجود شوکاز نوٹس واپس لے لئے ہیں، خامیاں ہر جگہ پر ہیں کوئی بھی مکمل نہیں، عدالت توقع رکھتی ہے آئندہ آپ عوامی سطح پر زیر التوا کیسز کے حوالے سے رائے نہیں دیں گے، عدالت آپ کے اس عمل کو نظر انداز کر رہی ہے۔جسٹس اطہر من اللہ نے غلام سرور کی جانب سے بیان کو سیاسی قرار دینے کو سراہا اور کہا سیاست کی وجہ سے لوگوں کا اعتماد خراب کرنا کسی کے مفاد میں نہیں، سیاسی عدم استحکام ہے، عوام پارلیمنٹ کی جانب دیکھ رہے ہیں، ایسے میں اچھا نہیں لگتا توہین عدالت کی کارروائی کی جائے۔یاد رہے 14 نومبر کو توہین عدالت کیس میں وفاقی وزیر ہوا بازی غلام سرور خان نے عدالت سے غیر مشروط معافی مانگی تھی، جس پر عدالت نے فیصلہ محفوظ کرلیا تھا اور آئندہ سماعت پر فردوس عاشق اعوان، غلام سرور ذاتی طور پر پیش ہونے کا حکم دیا تھا۔

توہین عدالت معافی

 جدہ،اسلام آباد(محمد اکرم اسد،سٹاف رپورٹر) وزیر اعظم کی معاون خصوصی اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان  او آئی سی کے سیکرٹری جنرل اور سعودی وزیر خارجہ کی دعوت پر جدہ میں او آئی سی کے قیام کی گولڈن جوبلی تقریبات میں شرکت اور پاکستان کی نمائندگی کر کے کیلئے 2 روزہ دورے پر سعودی عرب پہنچ گئیں،  جدہ پہنچ گئیں،ائیر پورٹ پر سعودی عرب میں پاکستان کے سفیر راجہ علی اعجاز، او آئی سی میں پاکستان کے مستقل نمائندے رضوان شیخ،قو نصلیٹ کے افسران نے استقبال کیا، وہ او آئی سی کی 50ویں سالگرہ کی افتتاحی تقریب میں شرکت کریں گی، انکی دیگر مصروفیات میں پاکستانی کمیونٹی اور سعودی عرب میں موجود پاکستانی صحافیوں سے ملاقات، عمرہ اورروضہ رسولؐ پر حاضری کی سعادت حاصل کرنا بھی شامل ہیں۔جدہ روانگی سے قبل  پیر کو اسلام آباد ہائی کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو میں ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا کہنا ہے بطور بانی رکن پاکستان نے او آئی سی میں ہمیشہ فعال اور متحرک کردار ادا کیا،ناروے میں قر آن پاک کی بے حرمتی انتہائی افسوس ناک واقعہ ہے جس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے،وزیر اعظم عمران خان کی ہدایت پر ناروے جیسے بد قسمت اور افسوس ناک واقعات، مقبوضہ جموں کشمیر کی حالیہ سنگین صورتحال اور بابری مسجد کے حوالے سے مسلمانوں کے حقوق پر ڈاکہ اور ان کے جذبات کو ٹھیس پہنچانے کے عمل کے خلاف آواز اٹھاؤں گی،اسلامو فوبیا کے ساتھ جڑا بیانیہ دنیا کے امن کیلئے خطرہ ہے۔ ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ اسلامو فوبیا کے تدارک کیلئے تمام اسلامی ممالک کو جامع مشترکہ لائحہ عمل ترتیب دینا ہو گا،ہمیں اسلام کا حقیقی اور روشن چہرہ دنیا بھر میں روشناس کرانا ہے۔ مولانا کا پلان اے بری طرح ناکام اور پلان بی رسوائی کا سبب بنا، نواز شریف کو کافی دن ہوگئے اب تک مرض کی تشخیص نہ ہوئی، امید ہے نواز شریف کی حتمی بیماری سے قوم کو آگاہ کیا جائے گا، آصف زرداری کی پارٹی اور ان کی فیملی کو صحت کی زیادہ فکرنہیں، زرداری صاحب عدالت میں درخواست دیں،عدالتی حکم کی پیروی ہوگی، آئندہ سال جون میں اسلام آباد ہائی کورٹ نئی عمارت منتقل ہوگی،ان اقدامات سے وکلا اور سائلین کی مشکلا ت کم ہوں گی،پاکستان نے قربانیاں دیکر انتہا پسندی اور دہشت گردی پر قابو پایا، اب کوئی پاکستان کو ترقی کرنے سے روک نہیں سکتا۔ اللہ کی شکر گزار ہوں عدالت نے ہمیں سرخروکیا اور عدالتی حقائق سے آگاہی دلائی۔ او آئی سی میں پاکستان کی نمائندگی کرکے وہاں تین اہم ایشوز اٹھائے جائیں گے،ایک نارو ے میں قرآن پاک بیحرمتی، دوسرا مسئلہ کشمیر، مقبوضہ وادی میں سرعام کشمیریوں کا قتل عام اورتیسرا بابری مسجد سے متعلق بھارتی سپریم کورٹ کا فیصلہ اور اس پر تحفظات شامل ہیں۔ عو ام، حکومت پاکستان اور او آئی سی کو ملکر حکمت عملی بنانا ہوگی،تب ہی بھارت کو روکا جاسکے گا۔ ہندو توا عالم اسلام کیلئے چیلنج بنتا جارہا ہے،مولانا فضل الرحمان کے حوالے سے فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا مولانا صاحب کیساتھ ان کے اپنے لوگ نہیں تو عوام کیسے ہوگی، مولانا جھوٹ کا سہارا لیکر خود کو تسلیاں دے رہے ہیں، انہوں نے انتہا پسند سوچ اختیار کی اور عوام نے انہیں مسترد کردیا۔ آصف زرداری کی پارٹی اور ان کی فیملی کو صحت کی زیادہ فکرنہیں۔

فردوس عاشق

مزید : صفحہ اول