ٹیکس وصولیوں کو بڑھانے کے لئے کوششیں تیز کی جائیں، مکیش کمار

ٹیکس وصولیوں کو بڑھانے کے لئے کوششیں تیز کی جائیں، مکیش کمار

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر) سندھ کے وزیر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن و انسداد منشیات اور پارلیمانی امور مکیش کمار چاؤلہ نے متعلقہ ڈائریکٹرز ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن و انسداد منشیات سے کو ہدایت دی ہے کہ وہ تمام ٹیکسوں کی وصولی کے لئے اپنی کوششوں کو تیز کریں اور ٹیکس ادا کرنے والوں کو پراپرٹی ٹیکس کے چالانوں کی بروقت فراہمی کو یقینی بنائیں اور اگر ضرورت محسوس ہو تو نجی کورئیر سروس کے ذریعے چالان متعلقہ افراد کو بھجیں جائیں ۔ یہ بات انہوں نے اپنے دفتر میں ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ سیکریٹری ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن و انسداد منشیات عبدالحلیم شیخ، ڈائریکٹر جنرل شعیب احمد صدیقی اور دیگر ڈائریکٹرز نے بھی اجلاس میں شرکت کی۔ اجلاس کو بریفنگ دیتے ہوئے، ڈائریکٹر جنرل ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن و انسداد منشیات شعیب احمد صدیقی نے بتایا کہ اکتوبر، 2019 تک 22517.679 ملین روپے ٹیکس کی وصولی ہوئی جبکہ سالانہ ہدف 84700.084 ملین روپے ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جائیداد ٹیکس اور پیشہ ورانہ ٹیکس کے زیادہ تر چالان ٹیکس دہندگان کو پیش نہیں کیے گئے تھے، تاہم متعلقہ افسران کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ ٹیکس ادا کرنے والوں کو چالان پیش کرنے کے عمل کو تیز کریں۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن و انسداد منشیات اور پارلیمانی امور مکیش کمار چاؤلہ نے ہدایت کی کہ مطلوبہ نتائج حاصل کرنے کے لئے عملے کی کمی کو دور کیا جائے اور انٹرنیٹ سروس کے ہموار رابطے کو یقینی بنایا جائے۔ انہوں نے یہ بھی ہدایت کی کہ خود مختار اداروں / کارپوریشنز سے بقایاجات کی وصولی کے لئے ایک جامع منصوبہ بنایا جائے اور اس سلسلے میں تمام کاوشیں بروئے کار لائی جائیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ آنے والے مہینوں میں پروفیشنل ٹیکس کی وصولی میں بہتری لانے کے لئے سخت کوششیں کی جانی چاہئیں، انہوں نے افسران اور اہلکار جو سرکاری واجبات کی وصولی میں اپنے بنیادی فرائض کی انجام دہی میں ناکام رہتے ہیں ان کے خلاف تادیبی کارروائی کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ ٹیکس کی وصولی افسران کا بنیادی فرض ہے اور انہیں اس پر توجہ دینی ہوگی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر