نیب بلین ٹری منصوبے میں کرپشن کا نوٹس لے: ایمل ولی خان 

نیب بلین ٹری منصوبے میں کرپشن کا نوٹس لے: ایمل ولی خان 

  



پشاور(سٹی  رپورٹر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ ملک سے کرپشن کے خاتمے کی رٹ لگانے والی تحریک انصاف حکومت کا اصل مکروہ چہرہ عوام کے سامنے آگیا ہے‘ آڈیٹرجنرل آف پاکستان کی جانب سے بلین سونامی ٹری منصوبے میں 47 کروڑ روپے سے زائد کی کرپشن کی نشاندہی کے بعد اب ضرورت اس امر کی ہے کہ پی ٹی آئی کے ادنیٰ ورکر سے لیکرپارٹی چیئرمین وزیراعظم عمران خان تک دوسروں کو کرپشن کے حوالے سے بھاشن دینا بندکردیں اوراپنے گریبانوں میں جھانکیں کیونکہ جو خود کرپشن کی بہتی گنگا میں ہاتھ دھو رہے ہوں انہیں دوسروں کے احتساب اور ان پر کیچڑ اچھالنے کا کوئی حق نہیں پہنچتا‘ انہوں نے کہا کہ بلین سونامی ٹری منصوبے میں ایک طرف ریکارڈکرپشن کی گئی تودوسری طرف منصوبے کے ذریعے منظورنظرلوگوں کو نوازاگیااور یہ رپورٹیں بھی منظرعام پرآئیں کہ مارکیٹ ریٹ سے انتہائی زیادہ نرخوں پرپودے خرید کر قومی خزانہ کو کروڑوں کا ٹیکہ لگایا گیا‘ ایمل ولی خان نے کہا کہ بلین ٹری منصوبے میں کروڑوں کی بے قاعدگیاں سامنے آنے پر عوام کی آنکھیں کھل جانی چاہئیں‘اے این پی کے صوبائی صدر نے اس امر پر حیرت کا اظہارکیا کہ جن لوگوں کے خلاف صرف الزامات ہیں وہ جیلوں میں سڑ رہے ہیں جبکہ دن دیہاڑے قومی وسائل پر ہاتھ صاف کرنے والے یوں دندناتے پھر رہے ہیں‘ انہوں نے قومی احتساب بیورو (نیب) سے مطالبہ کیا کہ وہ بلین ٹری منصوبے میں ہونے والی کروڑوں کی کرپشن پر فوری طورپر حرکت میں آئے‘ انہوں نے نیب پر بھی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ادارے نے پشاور رپیڈ بس منصوبے میں کرپشن پر موقف اپنایا کہ وہ کچھ نہیں کرسکتا کیونکہ کیس عدالت میں ہے اب بلین ٹری منصوبے پراس کا موقف کیا ہوگا‘ اے این کے صوبائی صدر نے سپریم کورٹ سے بھی مطالبہ کیا کہ وہ بلین سونامی ٹری منصوبے میں کرپشن پر سوموٹو ایکشن لے 

مزید : پشاورصفحہ آخر