شناختی کارڈ گم ہونے پر ایف آئی آر کی شرط ختم‘ صر ف بیان حلفی کافی

شناختی کارڈ گم ہونے پر ایف آئی آر کی شرط ختم‘ صر ف بیان حلفی کافی

  



ملتان (سٹاف رپورٹر)نادرا نے سابق اور آئندہ کے کونسلرز اوریونین کونسل چیئرمینوں کے پاس موجود تصدیق کا اختیار ختم کردیا۔میٹرک کی سند، پاسپورٹ یا ڈومیسائل پرہی شناختی کارڈ بن جائے گا‘سائلین والد‘ والدہ کے کارڈ کے ساتھ تاریخ پیدائش لکھ کر دیں‘ب فارم بن جائیگا۔اب گزیٹڈ افسر کے پاس بھی نہیں جانا ہوگا۔ شناختی کارڈ ہولڈر والد یا بھائی یا فیملی ممبر ازخود فارم تصدیق کر سکے گا۔شوہر کے شناختی کارڈ پر بیوی کا نیا کارڈ بنے گا‘صرف 20 کا اسٹامپ پیپر لگانا ہوگا۔شناختی کارڈ گم ہونے پر اب ایف آئی آر (بقیہ نمبر35صفحہ12پر)

کی ضرورت بھی نہیں ہوگی‘ اسٹامپ پیپر بیان حلفی گمشدگی دے کر نیا شناختی کارڈ پرنٹ مل جائیگا۔کارڈ وصولی کیلئے اصل ٹوکن کے ساتھ خود دفتر جانا ہوگا‘اگر کوئی رشتہ دار جائے تو اتھارٹی لیٹر اس سے لے کر جائے اور کارڈ مل جائیگا۔مزید براں نام تبدیلی کیلئے بھی ا شتہار نہیں دینا ہو گا‘نئے کارڈ کے لئے نادرا افسر انٹرویو کرے گا اور کمنٹس دے گا۔

کانی 

مزید : ملتان صفحہ آخر