برطانیہ میں موجود ڈاکٹروں نے نوازشریف کو ہسپتال داخلے کی ہدایت کردی

برطانیہ میں موجود ڈاکٹروں نے نوازشریف کو ہسپتال داخلے کی ہدایت کردی
برطانیہ میں موجود ڈاکٹروں نے نوازشریف کو ہسپتال داخلے کی ہدایت کردی

  



لندن (ویب ڈیسک) سابق وزیراعظم نوازشریف گزشتہ ایک ہفتے سے علاج کی غرض سے لندن میں موجود ہیں جہاں ان کا طبی معائنہ اور مختلف ٹیسٹ کیے جارہے ہیں۔

جیو نیوز کے مطابق لندن میں علاج کے لیے مقیم سابق وزیراعظم نوازشریف دل کا معائنہ کرانے کے لیے لندن برج ہسپتال پہنچے۔ طبی معائنے کے بعد ڈاکٹروں نے سابق وزیراعظم کو ہسپتال میں داخل ہونے کی تجویز دے دی۔معائنے کے بعد نوازشریف ہسپتال سے واپس گھر روانہ ہوگئے، ان کے ہمراہ شہباز شریف، حسین نواز، وقار احمد، محمد حنیف اور ناصر بٹ بھی تھے۔نواز شریف کے چیک اپ کے بعد ہسپتال کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شہباز شریف کا کہنا تھا کہ ڈاکٹرز ہیماٹولوجسٹ کی رپورٹس کا انتظار کررہے ہیں۔

وزیر ریلوے شیخ رشید کے بیان کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ شیخ رشید کی کسی بات کا کبھی جواب نہیں دیا، اللہ تعالی شیخ رشید کو ہدایت دے۔اس موقع پر نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کا کہنا تھا کہ ڈاکٹروں نے نواز شریف کو ہسپتال میں داخل ہونے کی ہدایت کی ہے، نواز شریف کا پی ای ٹی اسکین جمعرات کو ہو گا۔واضح رہے کہ نوازشریف لندن میں علاج کی غرض سے 19 نومبر سے موجود ہیں اوراس دوران وہ 3 بار طبی معائنے کے لیے گھرسے باہرنکلے ہیں۔

دو روز قبل لندن کے یونیورسٹی ہسپتال میں دل کے ماہر معالج ڈاکٹرلارنس نے نوازشریف کا طبی معائنہ کیا تھا۔اس حوالے سے نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کا کہنا تھا کہ سابق وزیراعظم نے ڈاکٹر لارنس سے یونیورسٹی کالج ہسپتال (ہارٹ ہسپتال) میں دل کا معائنہ کرایا، ان کو دل سے متعلق ٹیسٹ اور علاج کا روڈمیپ دیا گیا ہے۔ڈاکٹر عدنان کے مطابق ڈاکٹر لارنس گائز ہسپتال کے ہیماٹولجسٹس کی معاونت سے نواز شریف کا علاج کریں گے۔اس سے قبل پاکستان سے برطانیہ پہنچنے کے بعد لندن کے گائز ہسپتال میں نواز شریف کا 4 گھنٹے تک طبی معائنہ ہوا تھا اس دوران ان کےدل کے معائنے کے ساتھ خون کے ٹیسٹ بھی کیے گئے تھے جن کے نتائج آئندہ چند روز میں آئیں گے۔

مزید : برطانیہ