اسلام آباد ہائیکورٹ نے عمران خان کے خلاف توہین عدالت کے کیس کا فیصلہ سنادیا

اسلام آباد ہائیکورٹ نے عمران خان کے خلاف توہین عدالت کے کیس کا فیصلہ سنادیا
اسلام آباد ہائیکورٹ نے عمران خان کے خلاف توہین عدالت کے کیس کا فیصلہ سنادیا

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آباد ہائیکورٹ نے وزیراعظم کے خلاف دائر کی جانے والی توہین عدالت کی درخواست مسترد کردی۔عدالت نے درخواست کو ناقابل سماعت قراردیتے ہوئے خارج کردیا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے کہاعدالتوں کو تنقید کا خوف نہیں کیونکہ عوام کا بھروسہ ہی عدلیہ کا اعتمادہے۔عدالت نے کہا یہ محسوس نہیں ہوتا کہ عمران خان نے عدالت کی توہین کی۔عمران خان کا عدلیہ بحالی تحریک میں بھی اہم کردار رہاہے۔تین صفحات پر مشتمل فیصلہ سناتے ہوئے جسٹس اطہر من اللہ نے درخواست گزار سلیم اللہ کی درخواست خارج کردی۔

اس سے قبل وزیراعظم عمران خان کی تقریر کو متنازعہ قرار دیتے ہوئے لاہور ہائیکورٹ میں ان کے خلاف توہین عدالت کی درخواست جمع کرائی گئی ۔درخواست کی سماعت چیف جسٹس اسلام آبادہائیکورٹ جسٹس اطہرمن اللہ نے کی ۔درخواست میں موقف اختیارکیاگیاکہ وزیراعظم نے 18 نومبرکی تقریرمیں توہین عدالت کی۔ عمران خان نے تقریرسے عدلیہ کومتنازعہ بنانےکی کوشش کی۔درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کی تھی کہ عمران خان کو توہین عدالت کے قانون کے تحت سزا سنائی جائے۔دوران سماعت عدالت نے درخواست کے قابل سماعت ہونے پرفیصلہ محفوظ کرلیا جو اب سنایا گیا۔وزیراعظم کیخلاف درخواست سابق آئی جی پولیس سلیم اللہ نے دائر کی تھی۔

واضح رہے کہ اٹھارہ نومبر کو ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے سپریم کورٹ کے چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ سے اپیل کی تھی کہ وہ عوام کا عدلیہ پر اعتماد بحال کرنے کیلئے مزید اقدامات کریں۔

مزید : اہم خبریں /قومی