’ نہ اس سلیکشن کو مانتے ہیں اور نہ ہی کسی اور سلیکشن کو مانیں گے اور ۔۔۔ ‘ بلاول کے اعلان نے حکومتی ایوانوں میں ہلچل مچادی

’ نہ اس سلیکشن کو مانتے ہیں اور نہ ہی کسی اور سلیکشن کو مانیں گے اور ۔۔۔ ‘ ...
’ نہ اس سلیکشن کو مانتے ہیں اور نہ ہی کسی اور سلیکشن کو مانیں گے اور ۔۔۔ ‘ بلاول کے اعلان نے حکومتی ایوانوں میں ہلچل مچادی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ ہم نہ اس سلیکشن کو مانتے ہیں اور نہ ہی کسی اور سلیکشن کو مانیں گے، ہم عوامی وزیر اعظم چاہتے ہیں اور عوامی وزیر اعظم بنا کر رہیں گے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے اپوزیشن کی اے پی سی کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کی روایت ہے کہ وہ ہمارے ساتھ تعاون نہیں کر رہی، ہماری فیملی کی طرف سے دی گئی درخواست زیر التوا ہے ، ہمارا مطالبہ ہے کہ نجی ڈاکٹر کو رسائی دی جائے تاکہ یہ تسلی ہوسکے کہ زرداری صاحب کا ٹھیک طرح سے علاج ہورہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آصف زرداری نے ضمانت کیلئے اپلائی نہیں کیا، سپریم کورٹ میں ہماری درخواست نہیں سنی گئی لیکن امید ہے کہ جلد از جلد ہمارا کیس سماعت کیلئے لگے گا اور قوانین کی جو خلاف ورزی کی گئی ہے اس کو درست کیا جائے گا۔

ایک سوال کے جواب میں چیئرمین پیپلز پارٹی کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی الیکشن لڑنے کیلئے تیار ہے، اپوزیشن کا مطالبہ ہے کہ الیکشن صاف اور شفاف ہو ، ہم نہیں چاہتے کہ 2018 کی طرح سلیکشن کی جائے۔ہم نے دھرنے پر اے پی سی میں بات کی ہے، تمام جماعتیں اس بات پر متفق ہیں کہ ہم نہ اس سلیکشن کو مانتے ہیں اور نہ ہی کسی اور سلیکشن کو مانیں گے، ہم عوامی وزیر اعظم چاہتے ہیں اور عوامی وزیر اعظم بنا کر رہیں گے۔

مزید : اہم خبریں /قومی