وفاقی کابینہ نے آرمی ریگولیشنز میں ترمیم کرکے معززعدالت کی مدد کی ہے ، وفاقی وزیر شفقت محمود

وفاقی کابینہ نے آرمی ریگولیشنز میں ترمیم کرکے معززعدالت کی مدد کی ہے ، وفاقی ...
وفاقی کابینہ نے آرمی ریگولیشنز میں ترمیم کرکے معززعدالت کی مدد کی ہے ، وفاقی وزیر شفقت محمود

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)وفاقی وزیر شفقت محمودنے کہاہے کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی توسیع سے متعلق اپنی آبزرویشن میں معزز عدالت نے یہ کہا ہے کہ آرمی ریگولیشن 255میں ایکسٹینشن کا ذکر نہیں جس کی وجہ سے وفاقی کابینہ نے عدالت کی مدد کرنے کیلئے آرمی ریگولیشن میں لفظ ایکسٹینشن کا اضافہ کیاہے تاکہ یہ عدالت کے مدد گارثابت ہو۔

وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شفقت محمود نے کہا کہ وزیر اعظم کی صوابدید ہے کہ وہ اس بات کا فیصلہ کریں کہ کیا حالات ایسے ہیں کہ جن کے تحت آرمی چیف کو مدت ملازمت میں توسیع دینے کی ضرورت ہے؟ آئین کے تحت وزیر اعظم کواس چیز کافیصلہ کرنے کا اختیار حاصل ہے ۔ انہوں نے کہاکہ یہ وزیر اعظم کاصوابدید ی اختیار ہے جس میں کچھ چیزوں کوذہن میں رکھاجاتاہے ۔ اس موقع پر آرمی چیف کو توسیع دیتے ہوئے اس بات کوذہن میںرکھا گیا کہ اس وقت خطے کے غیر معمولی حالات ہیں جن میں 1971کے بعد ہندوستان نے پہلی بار پاکستان کی حدود کی خلاف وزری کی ، گارگل میں جارحیت کی کوشش کی ، کشمیر میں کرفیولگایا ہواہے ۔انہوں نے کہ ان غیرمعمولی حالات میں پلوامہ جیسے واقعہ کاخدشہ ہے ، بھارتی وزراءباربار دھمکیاں دے رہے ہیں۔ ان غیر معمولی حالات کے پیش نظر وزیر اعظم عمران خان نے فیصلہ کیا کہ ہماری آرمی کمانڈ اینڈ کنٹرول میں تسلسل ہونا چاہئے جس کے تحت صدر کو آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کی سمری بھیجی ۔

شفقت محمود کا کہنا تھاکہ آرمی چیف نے لیڈر شپ کامظاہرہ کیاہے جس کے تحت ہر لحاظ سے وزیر اعظم نے یہ فیصلہ کیاکہ جنرل باجوہ کی خدمات ، سرحد پر کشیدگی اور غیر معمولی حالات کے پیش نظر ان کو توسیع دینی چاہئے ۔انہوں نے کہا آئین و قانون کے تحت یہ وزیر اعظم کا صوابدیدی اختیار ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آرمی رگولیشنزکے قانون کے مطابق یہ سمری بھیجی گئی تھی جس کے تحت توسیع ہوئی ۔ ان کاکہنا تھا کہ معزز عدالت نے یہ کہا ہے کہ آرمی ریگولیشن 255میں ایکسٹینشن کا ذکر نہیں جس کی وجہ سے وفاقی کابینہ نے عدالت کی مددکرنے کیلئے آرمی ریگولیشنز میں ترمیم کرتے ہوئے لفظ ایکسٹینشن کا اضافہ کیاہے تاکہ یہ عدالت کیلئے مدد گارثابت ہو۔

مزید : اہم خبریں /قومی