خواتین پر تشدد  ہراسمنٹ، زیادتی کے واقعات پر زیرو ٹالرینس کی پالیسی ہے: آئی جی 

  خواتین پر تشدد  ہراسمنٹ، زیادتی کے واقعات پر زیرو ٹالرینس کی پالیسی ہے: ...

  

           لا ہو ر (کر ائم رپو رٹر)انسپکٹرجنرل پولیس پنجاب راؤ سردارعلی خان نے کہا ہے کہ خواتین پر تشدد، ہراسمنٹ، زیادتی کے واقعات پر زیرو ٹالرینس کی پالیسی ہے اور ایسے جرائم میں ملوث ملزمان کے خلاف ترجیحی بنیادوں پر کاروائی عمل میں لائی جاتی ہے۔ انہوں نے آر پی اوز، ڈی پی اوز کو ہدایت کہ صنفی جرائم کی روک تھام اور متاثرہ خواتین کو ریلیف فراہم کرنے کیلئے اپنی ذاتی نگرانی میں ہر ممکن اقدامات یقینی بنائیں راؤ سردار علی خان نے کہا کہ خواتین کی سہولت اور تحفظ کیلئے سیف سٹی اتھارٹیز کے تعاون سے”ویمن سیفٹی ایپ“لانچ کی گئی  جسے اب تک 1لاکھ 25ہزار سے زائد خواتین ڈاؤن لوڈ کر چکی ہیں۔ آئی جی پنجاب نے مزیدکہا کہ ویمن سیفٹی ایپ میں سائبر کرائم، ریسکیو، نیشنل ہائی وے، موٹر وے سمیت دیگر ہیلپ لائن نمبر بھی دئیے گئے ہیں اور اس ایپ کے ذریعے خواتین کسی بھی مشکل صورتحال میں پنجاب پولیس سے باآسانی مدد حاصل کرسکتی ہیں۔  خواتین کے تحفظ کیلئے صوبے کے تمام اضلاع میں اینٹی ویمن ہراسمنٹ سیل بھی کام کر رہے ہیں جس میں خواتین کی سہولت کیلئے لیڈی پولیس اہلکار وکٹم سپورٹ آفیسر کے طور پر تعینات ہیں جو مشکلات کی شکار خواتین کو ہر ممکن مدد اور راہنمائی فراہم کرتی ہیں  اینٹی ویمن ہراسمنٹ سیل کے ذریعے گذشتہ ماہ میں 2672مقدمات درج کرتے ہوئے 2141ملزمان کو گرفتار کیا  راؤ سردارعلی خان نے کہاکہ و یمن سیفٹی ایپ کے علاوہ خواتین پنجاب پولیس کے ایمر جنسی نمبر 15 سے بھی مدد حاصل کرسکتی ہیں۔آئی جی پنجاب نے یہ ہدایات خواتین پر تشدد کے خاتمے کے عالمی دن کے موقع پر اپنے پیغام میں دیں۔ آئی جی پنجا ب نے مزیدکہاکہ دوران حراست ملزمان خصوصا خواتین ملزمان پر تشدد کے واقعات پر سخت ترین ایکشن لیا جارہا ہے اور قصوروارن کے خلاف محکمانہ و قانونی کاروائی عمل میں لائی جاتی ہے۔انہوں نے کہاکہ خواتین کے سکولز، کالجز اور یونیورسٹیوں میں ویمن سیفٹی ایپ اور اینٹی ویمن ہراسمنٹ سیل کی آگاہی مہم چلائی جائے گی جبکہ طالبات، ورکنگ لیڈیز اور گھریلو خواتین سے گذارش ہے کہ وہ تمام اپنے موبائلز میں ویمن سیفٹی ایپ ڈاؤن لوڈ کریں تاکہ مشکل کے وقت وہ باآسانی پنجاب پولیس سے مدد اور معاونت حاصل کرسکیں۔

مزید :

علاقائی -