کمبوڈیا سے تجارت سمیت رابطہ مہم بڑھانے کی ضرورت، پرویزالٰہی 

کمبوڈیا سے تجارت سمیت رابطہ مہم بڑھانے کی ضرورت، پرویزالٰہی 

  

 لاہور (آن لائن)قائم مقام گورنر پنجاب چودھری پرویزالٰہی اور اعزازی قونصل جنرل چودھری سالک حسین ایم این اے سے کمبوڈیا کے سفیر اُنگ شان Mr. Ung Sean نے یہاں گورنر ہاؤس میں ملاقات کی۔ ملاقات میں باہمی دلچسپی کے امور اور موجودہ بین الاقوامی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ پاکستان اور کمبوڈیا کے درمیان باہمی رابطہ عوام مہم کو بڑھانے کی ضرورت ہے تاکہ دونوں ممالک کے درمیان ٹورازم اور تجارت مزید بڑھے۔ انہوں نے کہا کہ تیزی سے عالمی صورتحال تبدیل ہو رہی ہے خصوصاً صحت کی سہولیات اور خوراک کی کمی کے سلسلے میں انسانیت کو درپیش مشکلات کا حل مل جل کر نکالا جا سکتا ہے۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ پاکستان کمبوڈیا کی ترقی میں تعاون کر رہا ہے، کمانڈ اینڈ سٹاف کالج کوئٹہ کمبوڈیا کے طالبعلموں کو تعمیری شعبہ، پوسٹل سروس، ریلوے کا نظام، بینکنگ سیکٹر سمیت آرمی کمانڈ اینڈ سٹاف کورس پروگرام، ڈپلومہ پروگرام کامیابی سے کروا رہا ہے، اس کے علاوہ چھ مختلف پروگرام جن میں میڈیسن، ڈینٹل، فارمیسی میں ہر سال کمبوڈیا کے سٹوڈنٹس کو تعلیم دی جاتی ہے۔ کمبوڈیا کے سفیر اُنگ شان نے چودھری پرویزالٰہی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان خوبصورت اور امن پسند ملک ہے، کمبوڈین سٹوڈنٹس، تاجر اور سیاح پاکستان میں اپنے آپ کو محفوظ سمجھتے ہیں، ہم پاکستان کے ساتھ تجارت، ثقافت، سیاحت سمیت دیگر امور کو مزید آگے بڑھانے میں دلچسپی رکھتے ہیں۔علاوہ ازیں قائم مقام گورنر پنجاب چودھری پرویزالٰہی کو علامہ ڈاکٹر طاہر القادری نے کینیڈا سے ٹیلیفون کیا اور چودھری شجاعت حسین کی خیریت دریافت کی۔ چودھری پرویزالٰہی نے ڈاکٹر طاہر القادری کا شکریہ ادا کرتے ہوئے ان کی صحت بارے معلوم کیا۔ ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا کہ چودھری شجاعت حسین بڑے ملنسار اور سلجھی ہوئی شخصیت کے مالک ہیں۔ انہوں نے 2014ء کے دھرنے کے حوالے سے یادیں تازہ کیں اور چودھری شجاعت حسین اور چودھری پرویزالٰہی کی صحت کے حوالے سے خصوصی دعا کی اور نیک خواہشات کا اظہار کیا۔ 

پرویزالٰہی 

مزید :

صفحہ آخر -