خواتین کو بااختیار بنا کر عائلی نظام کو مضبوط کیا جا سکتا ہے، آشفہ ریاض

   خواتین کو بااختیار بنا کر عائلی نظام کو مضبوط کیا جا سکتا ہے، آشفہ ریاض

  

 لاہور(لیڈی رپورٹر)صوبائی وزیر برائے ترقی خواتین آشفہ ریاض فتیانہ نے کہا ہے کہ خواتین کو بااختیار اور معاشی طور پر خود مختار بنا کر عائلی نظام کو مضبوط کیا جا سکتا ہے۔یہ بات انہوں نے بہاؤالدین ذکریا یونیورسٹی ملتان میں مسلم عائلی نظام، چیلنجز اور ان کا تدارک کے عنوان سے منعقدہ بین الاقوامی کانفرنس کے اختتامی سیشن سے اپنے خطاب کے دوران کہی۔ انہوں نے کہا کہ خواتین کو بااختیار بنانے کیلئے حکومت ترجیحی بنیادوں پر کام کر رہی ہے اور اس سلسلے میں قانون سازی کے ساتھ ساتھ عملی اقدامات بھی کئے جا رہے ہیں۔صوبائی وزیر نے کہا کہ خواتین کوترقی کے دوڑ میں مردوں کے شانہ بشانہ شریک کر کے خواتین کی ترقی کا خواب شرمندہ تعبیر ہو سکتا ہے۔

 آشفہ ریاض نے کہا کہ حکومت نے خواتین کو وراثت میں لازمی حصہ دلوانے کیلئے قانون سازی کر دی ہے جبکہ مختلف شہروں میں خواتین کی سہولت کے پیش نظر ورکنگ وومن ہوسٹلز بنائے گئے ہیں۔ مختلف سرکاری اور نجی اداروں میں ڈے کئیر سنٹرز کے قیام سے خواتین کو بچوں کی نگہداشت کے مسائل حل کرنے میں مدد ملی ہے۔صوبائی وزیر نے کہا کہ خاندان کو مستحکم اور پائیدار بنانے میں خواتین کا کردار بنیادی اہمیت کا حامل ہے۔ کانفرنس میں علی گڑھ یونیورسٹی انڈیا، برطانیہ، مصر اور دیگر ممالک سے آئے ہوئے مندوبین نے شرکت کی۔آشفہ ریاض فتیانہ نے محققین اور مقالہ نگاروں کی تجاویز کو سراہتے ہوئے حکومت کے تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -