رواں سال منشیات کے دھندے میں ملوث 13 ہزار سے زائد افراد گرفتار

    رواں سال منشیات کے دھندے میں ملوث 13 ہزار سے زائد افراد گرفتار

  

پشاور(کرائم رپورٹر) معاشرے کو منشیات کے ناسور سے پاک کرنے اور نوجوان نسل کو اس کے مضر اثرات سے بچانے کی خاطر پشاور پولیس نے رواں سال کے دوران13 ہزار سے زائد افراد کو گرفتار کیا ہے، گرفتار افراد میں 2 ہزار سے زائد منشیات ڈیلرز وغیرہ شامل ہیں، کریک ڈاون کے دوران اندرون شہر اور نواحی علاقوں میں قائم متعدد آئس اور ہیروئن فیکٹریاں سیل کرنے سمیت بین الاقوامی اور بین الصوبائی سطح پر منشیات سمگل کرنے والے گروہوں کو بھی بے نقاب کیا گیا ہے، رواں سال جاری کارروائیوں کے دوران گرفتار ملزمان کے قبضہ سے مجموعی طور پر3ہزار6 سو کلو گرام سے زائد چرس،433 کلو گرام ہیروئن،380 کلو گرام افیون اور 392 کلو گرام آئس برآمد کی گئی ہے آئی جی پی خیبر پختونخواہ معظم جاہ انصاری کی ہدایات پر آئس اور دیگر منشیات کی روک تھام اور نوجوان نسل کو اس کی مضر اثرات سے بچانے کیلئے قائم کی گئی خصو صی نیٹ ٹیمیں بھی بنائی گئی ہیں اسی طرح پشاور پولیس نے منشیات کی لت میں مبتلا افراد کو معاشرے کے کارآمد شہری بنانے کی خاطر خصوصی بحالی مہم کا بھی آغاز کیا ہے جس کے تحت مختلف علاقوں سے نشئی افراد کو حراست میں لے کر بحالی مراکز میں داخل کرایا جاتا ہے اسی طرح نوجوان نسل خصوصا طلباء کو آئس اور دیگر منشیات کے مضر اثرات سے آگاہ کرنے اور شعور و آگاہی پیدا کرنے کی خاطر مختلف تعلیمی اداروں میں خصوصی آگہی سیمینارز اور واک کا اہتمام بھی کیا جاتا ہے  سی سی پی او عباس احسن نے رواں سال کے دوران جاری کریک ڈاون اور نشئی افراد کے علاج معالجہ کی خاطر بحالی مہم اور آگہی پروگرام پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کریک ڈاون کو مزید تیز کرنے کی ہدایت کی ہے، انہوں نے آگاہی مہم کے تحت علاقہ عمائدین اور پی ایل سی ممبران کے ساتھ خصوصی میٹنگز کے سلسلے کو بھی مزید تیز کرنے کی ہدایت کی ہے تاکہ عام شہریوں کو بھی منشیات کے مضر اثرات سے آگاہ کیا جا سکے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -