فیکٹریوں کو ٹیکس چھوٹ پر مشتمل بل فراہم کرنے کا حکم

فیکٹریوں کو ٹیکس چھوٹ پر مشتمل بل فراہم کرنے کا حکم

  

ملتان (خصو صی  ر پو رٹر)لاہور ہائیکورٹ ملتان بینچ کے جج مسٹر جسٹس محمد رضا قریشی نے عدالتی احکامات کے باوجود فیکٹریوں کو ٹیکس چھوٹ پر مشتمل بل فراہم کرنے کا حکم(بقیہ نمبر14صفحہ6پر)

 دیا ہے۔ قبل ازیں عدالت عالیہ نے ٹیکس چھوٹ سے محروم کرنے کے خلاف درخواست پر میپکو کو ایف بی آر کے ایس آر او پر عملدرآمد کرتے ہوئے صارفین سے حساب کتاب کرنے اور زائد وصول رقم واپس کرنے کا حکم بھی دیا تھا۔ فاضل عدالت میں طیب آئس فیکٹری سمیت 49 افراد نے درخواست دائر کی تھی کہ وہ آئس فیکٹری کا مالک ہے۔ تاہم ایف بی آر کے ایس آر او 2017 کے مطابق میپکو آئس فیکٹریوں کو بجلی کے بلوں میں شامل ٹیکسوں میں چھوٹ نہیں دے رہا ہے۔ الٹا درخواست گذار کو 21 لاکھ روپے کا بل بھجوا دیا گیا ہے۔ جس کو قبل ازیں فاضل عدالت میں چیلنج کیا تو ٹیکسوں کی مد میں حاصل ہونے والی رقم واپس دینے کا حکم دیا گیا لیکن اب تک 2019 کے فیصلے پر بھی علمدرآمد نہیں کیا گیا اور کوئی رقم واپس نہیں کی گئی ہے اور اب 10 لاکھ روپے کا بل بھجوانے کے ساتھ ٹیکس کی رقم بھی دگنی کر دی گئی ہے۔

حکم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -