چین میں سب سے زیادہ افراد کو سزائے موت دی گئی

چین میں سب سے زیادہ افراد کو سزائے موت دی گئی
چین میں سب سے زیادہ افراد کو سزائے موت دی گئی

  

بیجنگ(نیوزڈیسک)ویسے تومغربی میڈیا سعودی عرب کو سزائے موت کے حوالے سے کافی بد نام کرتا رہتا ہے اور دنیا بھر میںیہ تاثر پایا جاتا ہے کہ شاید اسی ملک میں سب سے زیادہ سزائے موت دی جاتی ہے لیکن حال ہی میں چھپنے والی تحقیق نے سب کو حیران کردیا جس میں بتایا گیا ہے کہ چین وہ ملک ہے جہاں صرف 2013ءمیں سب سے زیادہ سزائے موت دی گئی اور 2400افراد کواپنی جان سے ہاتھ دھونا پڑا ۔دلچسپ امر یہ ہے کہ یہ تعداد دنیا بھر میں دی گئی سزائے موت سے تین گنا زیادہ ہے۔ایک انسانی حقوق کی تنظیم ’دوئی ہیوا‘ کی جانب سے چین کے اخبار سے اکٹھے کئے گئے اعدادوشمار کے مطابق یہ تعداد دنیا بھر میں دی گئی سزائے موت سے تین گنا زیادہ ہے۔ تنظیم کے ترجمان کے مطابق جن افراد کو سزائے موت دی گئی ان پر بغاوت، منشیات کی سمگلنگ، جعلی کرنسی، زیادتی اور قتل کے الزامات تھے۔

کچھ عرصہ قبل ایمنسٹی انٹرنیشنل نے دنیا بھر میں دی گئے سزائے موت کی تفصیلات جاری کی تھیں لیکن اس میں چین کے اعدادوشمار شامل نہیں تھے،ایمنسٹی انٹرنیشنل کا کہنا تھا کہ چین کی جانب سے ان اعدادوشمار کو خفیہ رکھا جاتا ہے۔ لیکن ’دوئی ہیوا‘ کے اعدادوشمارنے سب کو حیران کردیا ہے۔ تحقیق میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ مذکورہ سال میں ایران نے 369، عراق نے 169، سعودی عرب نے 79، امریکہ نے39، صومالیہ نے 34، سوڈان نے 21، یمن نے 13، جاپان نے 8اور ویتنام نے 7 لوگوں کو سزائے موت دی۔

مزید :

انسانی حقوق -