سندھ حکومت کا تھر میں غذائی قلت دور کرنے کیلئے پروگرام شروع کرنے کا فیصلہ

سندھ حکومت کا تھر میں غذائی قلت دور کرنے کیلئے پروگرام شروع کرنے کا فیصلہ

کراچی (آ ئی این پی)سندھ حکومت نے تھر میں غذائی قلت دور کرنے کے لیے پروگرام شروع کرنیکا فیصلہ کرلیا جس کے تحت 50 ہزار خاندانوں کو ہر ماہ راشن بیگ دیئے جائیں گے۔ نجی ٹی وی کے مطا بق سندھ حکومت کے مشیر اطلاعات بیرسٹر مرتضی وہاب کا کہنا ہے کہ حکومت ہر ماہ راشن بیگ پر22 کروڑ روپے سے زائد خرچ کریگی، راشن بیگ میں اشیا کی مالیت ساڑھے 4 ہزار روپے ہوگی، بیگ کی تقسیم کا مقصد تھر کی خواتین اور بچوں میں غذائی کمی دور کرنا ہے۔مرتضی وہاب نے کہا کہ بے نظیر اِنکم سپورٹ پروگرام کے تحت امداد اور فی خاندان 50 کلوگندم کی تقسیم اس کے علاوہ ہیں، سندھ حکومت تھرپارکر کے مسائل کیحل کے لیے تمام وسائل بروئیکار لارہی ہے۔مشیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ بہتر خوراک ماں اور بچے کی صحت کے لیے ضروری ہے، ایسے اقدامات کررہے ہیں جس سے تھر میں شرح اموات کم ہو۔سندھ حکومت کی جانب سے راشن بیگ کی تقسیم کا سلسلہ پیر سے شروع ہونے کا امکان ہے۔تھرپارکر میں غذائی قلت کے باعث نومولود بچوں کی اموات کا سلسلہ جاری ہے اور تھر میں غذائی قلت سے بچوں کی اموات پر چیف جسٹس پاکستان نے بھی برہمی کا اظہار کیا تھا،سندھ حکومت نے صحرائے تھر کے باسیوں کے لیے بڑا قدم اٹھایا ہے اور علاقے میں غذائی قلت دور کرنے کا پروگرام شروع کرنیکا فیصلہ کیا ہے جس کے تحت 50 ہزار خاندانوں کو ہر ماہ راشن بیگ دیئے جائیں گے جن میں اشیائے ضروریہ اور قوت بخش خوراک شامل ہوگی،پروگرام کے لیے نادرا اور دیگر اداروں کی مدد سے 50 ہزار خاندانوں کی نشاندہی کی گئی ہے، راشن بیگ کی تقسیم کا پائلٹ پروجیکٹ ابتدائی طور پرتین ماہ کے لیے ہوگا۔

غذائی قلت

مزید : صفحہ آخر