نواز شریف کیخلاف العزیز ریفرنس میں نیب کا فی الحال حتمی بیان نہ دینے کا فیصلہ

نواز شریف کیخلاف العزیز ریفرنس میں نیب کا فی الحال حتمی بیان نہ دینے کا فیصلہ

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) نیب نے سابق وزیراعظم محمد نوازشریف کیخلاف العزیزیہ ریفرنس فی الحال حتمی بیان نہ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔نجی ٹی وی کے مطابق قومی احتساب بیورو نے سابق وزیراعظم محمد نوازشریف کے خلاف اسلام آباد کی احتساب عدالت میں زیر سماعت العزیزیہ ریفرنس میں فی الحال حتمی بیان نہ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔نیب ذرائع کے مطابق احتساب عدالت میں العزیزیہ اور فلیگ شپ کی ایک ساتھ دو سماعتیں ہورہی ہیں اور پراسیکیوشن کا کام مکمل ہوچکاہے نیب نے فیصلہ کیا ہے کہ جب تک دونوں ریفرنسز پر سماعت مکمل نہیں ہوجاتی تب تک حتمی بیان نہیں دیاجائے جب کہ اس دوران نئے شواہد ملے تو انہیں عدالت کے روبرو پیش کیا جائیگا۔نیب کا مؤقف ہے کہ حتمی بیان استغاثہ کی طرف سے شواہد مکمل ہونے پر دیا جاتاہے اور احتساب عدالت حتمی بیان دینے کیلئے ہمیں مجبور نہیں کرسکتی۔ذرائع کے مطابق عدالت نے نیب سے حتمی بیان دینے کا کہا تھا تاکہ ملزم کا بیان ریکارڈ کیا جاسکے تاہم اب نیب کی جانب سے بیان نہ دینے پر عدالت نے فلیگ شپ میں واجد ضیاء اور نیب کے تفتیشی افسر کو بلانے کا فیصلہ کیا ہے۔ذرائع نے بتایا کہ احتساب عدالت نے نیب کے حتمی بیان کا فیصلہ سپریم کورٹ کی طرف سے دی گئی ڈیڈ لائن کی وجہ سے کیا اور عدالت اس معاملے پر(آج) تحریری حکم بھی جاری کرے گی۔واضح رہے کہ احتساب عدالت پاناما کیس کی روشنی میں بننے والے ایون فیلڈ ریفرنس میں نوازشریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کو سزا سناچکی ہے جسے اسلام آباد ہائیکورٹ نے معطل کردیاہے۔

نیب بیان

مزید :

صفحہ اول -