توانائی بحران ختم کرنے کی بجائے عوام ’’پر بجلی بم ‘‘ گرانے کا فیصلہ ظلم

توانائی بحران ختم کرنے کی بجائے عوام ’’پر بجلی بم ‘‘ گرانے کا فیصلہ ظلم

  

لاہور( لیاقت کھرل)شہری حلقوں میں بجلی کے نرخوں میں اضافے کوجلتی پر تیل چھڑکنے اور عوام پربجلی گرانے کے مترادف قرار دیا ہے۔اورکہاہے کہ حکومت نے توانائی کابحرا ن ختم کرنے کے بجائے بجلی بم گرانے کا فیصلہ کرکے عوا م کے ساتھ ظلم کیاہے ۔ان خیالات کا اظہار روزنامہ پاکستان کی جانب سے کیے گئے عوامی سروے اور رائے جاننے کے دوران شہریوں نے کیاہے اس موقع پرشہری عمران اسلم کا کہناتھاکہ حکومت نے پہلے گیس کی قیمتوں میں اضافہ کیاجس سے عام شہری گیس کی سہولت سے ایک قسم کا محروم ہوکررہ جائے گااور اب بجلی کے نرخوں میں اضافہ کرکے عوام کے زخموں پرنمک چھڑکنے کا کام کیاہے ۔شہری وسیم اخترنے کہاہے حکومت کوچاہیے سب سے پہلے بجلی کی پیداوار بڑھانے پراقدامات کرتی جبکہ حکومت نے توانائی بحران پرقابو پانے کے بجائے اقتدارسنبھالتے ہی بجلی اور گیس کی قیمتیں بڑھا دی ہے جبکہ عوام پر بجلی اور گیس بم گرانے کے متراد ف ہے ۔شہری اجمل چودھری ،میاں شبیرحسین ،چوھدری ارشد محمود ،محمد افتخاربھولا،ملک محمد عرفان ،دکاندار محمد صدیق اور حاجی ستار احمد نے کہاکہ حکومت سب سے پہلے بجلی کے بحران پر قابو پائے اور دوسری ترجیح میں بجلی کی چوری کی روک تھام کرے اور اس کے بعد بڑے بڑے مگر مچھوں سے کروڑوں روپے کے واجبات (ریکوری ) وصول کرے اس کے بعد بجلی کی قیمتوں میں سوچے اور اس کے علاوہ سستی بجلی پیدا کرنے کے لئے عوامی مفاد میں منصوبے بنائے اور اس سے عوام کو سستی بجلی بھی مل سکے گی اور ملک میں توانائی کابحران بھی ختم کرنے میں مدد ملے گی اور اس کے ساتھ گھریلو سیکٹرسمیت کمرشل سیکٹرمیں وافر مقدار میں بجلی فراہم کی جاسکے گی اور اس کے ساتھ ساتھ صنعتوں کو بھی بجلی مل سکے گی جس سے صنعتی پہیہ چلتارہے گااور برآمدات بھی بڑھے گی جبکہ معشیت بھی مضبوط ہوگی اور اس کے ساتھ ساتھ عوام کو سستی اور وافر مقدار میں بجلی بھی فراہم کی جاسکے گی ۔

پاکستان سروے

Back to Conve

مزید :

صفحہ اول -