کرپشن کا الزام ، ایس ایچ او ہربنس پورہ سمیت 3اہلکاروں کیخلافمقدمہ درج

کرپشن کا الزام ، ایس ایچ او ہربنس پورہ سمیت 3اہلکاروں کیخلافمقدمہ درج

لاہور(کر ائم رپو رٹر)محکمہ انٹی کرپشن نے بدعنوانی کے الزام میں سابق ایس ایچ او ہربنس پورہ صغیر میتلا، اے ایس آئی اسرار، کانسٹیبل عطا کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دیدیا ۔ مقدمہ درج ہونے کے بعد پنجاب پولیس اپنے ہی پیٹی بند بھائیوں کو گرفتار کرنے میں ٹال مٹول سے کام لینے لگی۔تفصیلات کے مطابق سابق ایس ایچ او ہربنس پورہ صغیر میتلا نے اے ایس آئی اسرار، کارخاص کانسٹیبل عطا اور دوسرے ملازمین کے ساتھ رام گڑھ میں ایک سال پہلے چھاپہ مار کر ملک طارق اور اس کے دوستوں وسیم،شکیل مغل سے چار لاکھ سے زائد کی رقم چھین لی تھی جس کے خلاف ملک طارق نے انٹی کرپشن میں درخوات دی تھی ۔ ایک سال کے جدوجہد کے بعد انٹی کرپشن نے ملزمان کے خلاف مقدمے کے اندراج کا حکم دیا لیکن پولیس اب تک ملزمان کو گرفتار نہ کر سکی۔سابق ایس ایچ او ہربنس پورہ سب انسپکٹر صغیر میتلا،اے ایس آئی اسرار، کانسٹیبل عطا اور ان کے ساتھی مدعی کو دھمکیاں دے رہے ہیں کہ مقدمہ واپس لو ورنہ زندہ نہیں چھوڑیں گے۔ مدعی کا کہنا ہے کہ پہلے مقدمہ درج کرانے کے لئے ایک سال سے زائد چکر لگاتا رہا اب مقدمہ درج ہونے کے کئی بعد پولیس ملزمان کو گرفتار کرنے میں ناکام ہے۔

ملزمان با اثر ہیں ان سے مجھے جان کا خطرہ ہے۔ملک طارق نے وزیراعلیٰ پنجاب،چیف جسٹس ہائیکورٹ اور پولیس کے اعلیٰ حکام سے اپیل کی ہے کہ ملزمان کو گرفتار کر کے مجھے انصاف دلایا جائے۔

مزید : علاقائی