ایچ بی ایل کو 9.9 ارب روپے کا بعد از ٹیکس مجموعی منافع

ایچ بی ایل کو 9.9 ارب روپے کا بعد از ٹیکس مجموعی منافع

  

کراچی (اکنامک رپورٹر) ایچ بی ایل نے 2018ء کے پہلے 9 ماہ کے لئے فی حصص 6.57 روپے کی آمدن کے ساتھ بعد از ٹیکس 9.9 ارب روپے کا مجموعی منافع کا اعلان کیا ۔ بورڈ نے نتائج کے ساتھ ایک روپے فی حصص (10 فیصد) ڈیویڈنڈ دینے کا بھی اعلان کیا جس کی وجہ سے 2018ء کے 9 ماہ کے لئے مجموعی طور پر 3 روپے فی حصص ڈیویڈنڈ ہوگیا۔ 2018ء کے 9 ماہ کے لئے قبل از ٹیکس منافع 17.7 ارب روپے رہا۔ 30 ستمبر 2018ء کو مجموعی کیپیٹل ایڈووکیسی ریشو 17 فیصد سے زائد رہا جو دسمبر 2017ء سے 105 بی پی ایس کا اضافہ ہے جبکہ بینک کے Tier 1 کیپیٹل ایڈووکیسی ریشو میں 75 بی پی ایس کے اضافے سے 12.74 فیصد ہوگیا۔ ایچ بی ایل کا بنیادی مقامی کاروبار مستحکم رہا۔ مجموعی مقامی ڈیپازٹس دسمبر 2017ء کی سطح سے بڑھ کر 1.8 کھرب روپے ہو گئے جس نے 14 فیصد سے زائد مارکیٹ شیئر کومستحکم رکھا۔ 2018ء کے پہلے 9 ماہ میں بینک نے کرنٹ اکاؤنٹس میں 10 فیصد اضافے کے باعث ڈومیسٹک CASA ڈیپازٹس میں 101 ارب روپے شامل کئے۔ کرنٹ اکاؤنٹس اور CASA دونوں کے تناسب میں بہتری جاری رہی جس میں جون 2018 ء سے بالترتیب 37.3 فیصد اور 88.1 فیصد مزید اضافہ ہوا۔ ایچ بی ایل نے ڈپازٹ میں مستحکم ترقی کی وجہ سے اوسط کرنٹ اکاؤنٹس میں 80 ارب روپے کا متاثر کن اضافہ ظاہر کیا جو 2017ء کے پہلے 9 ماہ کے مقابلے میں 15 فیصد زائد ہے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -