قائد اعظم ، اقبال کا پاکستان بنانا چاتے ہیں ، جنوبی پنجاب صوبہ کا وعدہ پورا کرینگے : چوہدری محمد سرور

قائد اعظم ، اقبال کا پاکستان بنانا چاتے ہیں ، جنوبی پنجاب صوبہ کا وعدہ پورا ...

  

ملتان(سپیشل رپورٹر ‘وقائع نگار‘نیوز رپورٹر)گورنر پنجاب چودھری محمد سرور نے کہا ہے کہ بجلی کی کمی کے پیش نظر پنجاب کی تمام یونیورسٹیوں کو ایک سال میں سولر سسٹم پر منتقل کردیں گے جبکہ طلبہ و طالبات کیلئے پینے کے صاف پانی کی دستیابی کو بھی یقینی بنائیں نشتر میڈیکل یونیورسٹی و ہسپتال میڈیکل اداروں میں ایک پریمیئر ادارہ ہے جو میڈیکل ایجوکیشن اور صحت کی سہولیات دے رہا ہے، وہ نشتر میڈیکل یونیورسٹی ملتان کے پہلے کانووکیشن سے خطاب کررہے تھے انہوں نے کہا ہے کہ نشتر ہسپتال میں نا صرف جنوبی پنجاب بلکہ دیگر تین صوبوں سے بھی مریض آتے ہیں محدود وسائل کے باوجود صحت کا شعبہ لوگوں کی خدمت کررہا ہے انہوں نے کہا کہ اکیسویں صدی میں ہماری بقا تحقیق،تعلیم اور سکل ڈویلپمنٹ میں ہے ہمارے معاشرے میں لڑکیاں آگے آرہی ہیں یونیورسٹیوں اور کالجوں میں لڑکوں کی جوحالت میں دیکھ رہا ہوں لگتا ہے لڑکوں کیلئے داخلے کا الگ سے کوٹہ رکھنے پڑے گا والدین بیٹیوں کے ساتھ ساتھ بیٹوں پر بھی توجہ دیں لڑکیاں تعلیمی میدان میں لڑکوں کو ناک آؤٹ کررہی ہیں نوجوان ہمارا محفوظ مستقبل ہیں،مستقبل سنوارنے میں اساتذہ اور والدین کی محنت بھی شامل ہے طلبہ والدین کے ساتھ ساتھ اساتذہ کی بھی عزت کریں انہوں نے کہا کہ تعلیم اور صحت کو نظرانداز کرکے طرقی کا خواب شرمندہ تعبیر ہوگا حکومت پبلک اور پرائیویٹ سیکٹر میں تعلیمی اداروں کی حوصلہ افزائی کررہی ہے انہوں نے کہا کہ میڈیکل تعلیمی اداروں میں بہترین پروفیشنل کی تیاری ہماری ترجیح ہے ڈاکٹرز پیشہ ورانہ امور کی دیانت داری سے انجام دہی سے والدین اور اساتذہ کا نام روشن کریں،کسی بھی مقام پر پہنچ جائیں اپنی مٹی اور اس سے جڑے لوگوں اور رشتوں کو نہیں بھلانا چاہیے جو اختیار ترقی انسانیت سے دور کردے اس کا کوئی فائدہ نہیں،ڈاکٹر ہر آنے والے مریض کو اپنا باپ،ماں،بھائی ،بہن اور عزیز سمجھ کر علاج کریں،نشتر میڈیکل یونیورسٹی ملتان کے وائس چانسلر پروفیسر مصطفیٰ کمال پاشا نے کہا کہ یونیورسٹی میں ٹیچنگ فیکلٹی کی کمی ہے اسے پورا کرنے کیلئے حکومت پنجاب خصوصی اقدامات اٹھائے،یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز لاہور وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر جاوید اکرم نے کہا کہ علاج معالجے میں پیشہ ورانہ اقدار کی پاسداری کو اپنائیں مریض اور ڈاکٹر یا مریض کے لواحقین کے درمیان محاظ آرائی کے واقعات ختم ہونے چاہیں،ڈاکٹر مسیحا کا کردار ادا کریں اور معاشرے میں اپنا مقام بنائیں،بعدازاں گورنر پنجاب نے کانووکیشن میں پوزیشن ہولڈر طلبہ و طالبات میں میڈلز تقسیم کئے۔جس میں لڑکیاں بازی لے گئیں،پروفیسر احمد یار مسعود،پروفیسر ظفر حسین تنویر،پروفیسر مسعود ہراج،پروفیسر راشد قمر راؤ،پروفیسر شاہد راؤ،پروفیسر وقار ربانی،پروفیسر غلام مجتبیٰ،ڈاکٹر الیاس تنویر،ایم این اے احمد حسین ڈیہڑ،ملک عامر ڈوگر ودیگر بھی موجود تھے۔دریں اثناء گورنر پنجاب چو ہد ری محمد سرورنے کہا کہ پاکستا ن تحریک انصا ف کے کا رکن پارٹی کا اثا ثہ ہیں،ان کی محنت اور کا وشو ں سے ہما ری لیڈر شپ اقتدار میں آ ئی ہے،اب ان کے جائز کامو ں کے کر نے کا وقت آگیا ہے۔وہ بلا خو ف و خطر افسرا ن کے پا س جا ئیں۔کارکنو ں کوزکو ۃ وعشر،بیت الما ل،پی ایچ اے میں اکاموڈ یٹ کر ینگے۔ انہو ں نے ان خیا لا ت کا اظہار سرکٹ ہا ؤ س ملتا ن میں پاکستا ن تحر یک انصا ف کے ورکروں کے وفد سے گفتگو کر تے ہوئے کیا۔اس موقع پر ارا کین قومی اسمبلی را نا قاسم نون، احمد حسین ڈ یہٹر پاکستا ن تحر یک انصا ف ملتا ن کے ضلعی صد ر اور پارکس اینڈ ہا رٹی کلچر اتھا رٹی ملتا ن کے چیئر مین اعجا ز حسین جنجو عہ ودیگر عہد یدا ران بھی موجود تھے۔ گورنر پنجا ب چو ہد ری محمد سر ور نے کہا کہ جنو بی پنجا ب میں پاکستا ن تحر یک انصا ف کو واضح مینڈ یٹ کارکنو ں کی بد ولت ملا ہے،جلد ہم انہیں جنو بی پنجا ب کے صو بے کا تحفہ دیں گے جس کا ہم نے وعدہ کیا ہوا ہے،انہو ں نے کہا کہ ہم در ست سمت میں چل پڑ ے ہیں۔جو حکومت عوام کو پینے کا صاف پا نی نہ دے سکے اسے اقتدا ر میں رہنے کا کوئی حق نہیں ہے۔ہم ہر تحصیل میں 5,5 لو گو ں پر مشتمل کمیٹی بنا ئیں گے جو صا ف پا نی با رے ڈ یٹا تیا ر کر ینگے اور پھر منصو بہ بند ی کے تحت اس مسئلے کو حل کر ینگے،کا رکنو ں کو بھی ان کمیٹیو ں میں شامل کر ینگے۔انہو ں نے کہا کہ وہ دن میں 18 گھنٹے کا م کرتے ہیں،ہفتے میں 3 دن تحر یک انصاف کے کارکنو ں سے ملتا ہو ں ان کیلئے گورنر ہا ؤ س کے دروازے کھلے ہیں۔جو حکو متیں کارکنو ں سے روابط نہیں رکھتیں وہ ختم ہو جا تی ہیں انہیں کارکنو ں کی تکا لیف کا احسا س ہے وہ ان کی عز ت وتوقیر کیلئے ہر فو رم پر آواز اٹھا ئیں گے۔اس موقع پر اعجا ز حسین جنجو عہ،خالد جاوید وڑا ئچ،ذہین کنو ل، را ؤ آ صف انو ر،اظہر کملا نہ، مر زا شارق بیگ،یونس غا زی،میجر مجیب احمد،قربان فا طمہ،خوش بخت خا ن،فیض اللہ، احتشام خا ن،را? بلا ل،محمد سلیم بخا ری ودیگر تحر یک انصا ف کے کارکنو ں نے خطا ب بھی کیا۔دریں اثناء گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا ہے کہ جنوبی پنجاب کو صوبہ بنانا پی ٹی آئی کے منشور کا حصہ ہے۔ انشائاللہ صوبہ بنانے کا وعدہ پورا کریں گے۔ ملک کے حالات گمبھیر ہیں اور حکومت کو چیلنجوں کا سامنا ہے۔ قوم کا عزم بلند ہے۔ پاکستانی قوم ہر بحران اور ہر مشکل سے نکلنا جانتی ہے۔ قومیں ڈیزاسٹرز سے کامیابی کے مواقع تلاش کرتی ہیں۔ صحت اور تعلیم‘ قانون کی حکمرانی‘ بلاتفریق و بلاامتیازی احتساب ترجیحات ہیں۔ حکومت کا بنیادی محور برآمدات (ایکسپورٹس) کا فروغ اور درآمدات (امپورٹس) میں کمی لانا ہے۔ پنجاب کی یونیورسٹیوں کے حالات سے آگاہ ہیں۔ جامع منصوبہ بندی کرکے مثبت نتائج دیں گے۔ ملک کو قائداعظم اور علامہ اقبال کا پاکستان بنانا چاہتے ہیں۔ ا داروں کو بااختیار بنایا جارہا ہے۔ اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ افسر عوامی نمائندوں کی بات نہ مانیں۔ عوامی نمائندے بیوروکریسی سمیت ہر ادارے پر چیک اینڈ بیلنس رکھیں گے۔ عوامی نمائندے عوام کے ووٹ اور مینڈیٹ رکھتے ہیں۔ گورنر پنجاب سابق صوبائی وزیر اور سابق صدر ایوان تجارت و صنعت ملتان و ڈیرہ غازی خان خواجہ جلال الدین رومی کی جانب سے دی گئی ظہرانہ تقریب سے خطاب کررہے تھے۔ گورنر پنجاب نے کہا کہ جی ایس پی پلس سے سابق حکومت نے خاطر خواہ فائدہ نہیں اٹھایا۔ بھارت سمیت کئی ممالک کی مخالفت کے باوجود پاکستان کو ڈیوٹی فری رسائی فراہم کی گئی لیکن سابق حکومت کی غلط پالیسیوں کے باعث برآمدات میں اضافے اور خیر زرمبادلہ کے حصول سے فائدہ نہیں اٹھایا جاسکا۔ بزنس کمیونٹی کو زیادہ سے زیادہ سہولیات فراہم کریں گے۔ پی ٹی آئی حکومت نے ٹیکسٹائل انڈسٹری کے لئے گیس کی قیمت نصف کردی ہے۔ اس اقدام سے ٹیکسٹائل سیکٹر کو 50ارب روپے کا فائدہ پہنچے گا۔ گیس سستی ہونے سے ٹیکسٹائل گروتھ اور ٹیکسٹائل ایکسپورٹ میں اضافہ ہوگا۔ گیس کی قیمتوں میں کمی کا بنیادی مقصد گلوبل مارکیٹ میں پاکستانی مصنوعات کو مقابلے اور مسابقت کی فضا میں مواقع میسر آئیں گے۔ گورنر پنجاب نے کہا کہ اہل ملتان اور جنوبی پنجاب کے لوگوں کے شکرگزار ہیں کہ پی ٹی آئی کو کلیئر مینڈیٹ دیا۔ پی ٹی آئی انشائاللہ عوامی توقعات پر پورا اترے گی۔ 70سالہ کلچر کو اوورنائٹ تبدیل نہیں کیا جاسکتا ہے تاہم کے پی کے طرز پر اداروں کو ٹھیک کرنے کے لئے کام شروع کردیا ہے اور قانون کی حکمرانی کا آغاز ہوگیا ہے۔ سابق صدر پرویز مشرف کے دور میں 45ارب روپے کے بجٹ سے کلین ڈرنکنگ واٹر فار آل کا منصوبہ شروع ہوا۔ سابق حکومتوں نے بھی صاف پانی کے نام پر منصوبے شروع کئے۔ انٹرنیشنل ڈونرز اور این جی اوز نے بھی اس حوالے سے کام کیا لیکن صورتحال یہ ہے کہ ایک ہزار فلٹریشن پلانٹس چل رہے ہیں تو دو ہزار بند ہیں۔ پنجاب بالخصوص جنوبی پنجاب میں فلٹریشن پلانٹس‘ آر او پلانٹس کی رپورٹ طلب کرلی ہے۔ صاف پانی کی فراہمی کے لئے کام کرنے والے اداروں‘ این جی اوز‘ فلاحی تنظیموں‘ ایوان تجارت حکومت کو فہرستیں ضرور فراہم کریں۔ ملک میں آلودہ اور گندے پانی سے 11لاکھ افراد موت کے منہ میں جاچکے ہیں۔ سابق حکومت کی غلط منصوبہ بندی سے لاہور کا زیرزمین پانی آلودہ ہوگیا۔ ماضی کی معروف گلوکارہ گل بہار بانو کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں گورنر پنجاب نے کہا کہ قومی ہیروز کی دیکھ بھال حکومت کا فرض ہے۔ تجاویز و سفارشات طلب کرلی ہیں اس حوالے سے جلد پالیسی لائیں گے۔ پی ٹی آئی حکومت اختیارات کی نچلی سطح پر منتقلی کے لئے کام کررہی ہے۔پوری دنیا میں سنٹرلائزیشن آف پاور کا خاتمہ ہوچکا ہے۔ صوبے میں حکومتی مشینری کے کام نہ کرنے کے حوالے سے گورنر نے کہا کہ ہر ادارہ اپنی اپنی آئینی حدود میں رہ کر کام کررہا ہے۔ ضمنی انتخابات میں کچھ حلقوں میں پی ٹی آئی کی شکست کے سوال پر گورنر نے کہا کہ پی ٹی آئی کی مقبولیت ہرگز کم نہیں ہوئی ہے۔ پی ٹی آئی نے اصولوں کو ترجیح دی اور صاف‘ شفاف اور غیرجانبدارانہ الیکشن کروائے۔ بہائالدین زکریا یونیورسٹی‘ خواتین یونیورسٹی میں ریگولروائس چانسلرز‘ ڈین اور پروفیسرز کی تعیناتی نہ ہونے‘ نوازشریف زرعی یونیورسٹی میں میرٹ سے ہٹ کر سابق گورنر پنجاب کے رشتہ داروں کی تقرریوں اور چوہدری پرویزالٰہی انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی ملتان میں بجٹ کی کمی اور سینئر ڈاکٹرز‘ سرجنز کی کمی پر گورنر پنجاب نے یقین دلایا کہ بہت جلد اقدامات کئے جائیں گے۔ وائس چانسلرز میرٹ پر لگیں گے۔ گورنر اور وزیراعلیٰ کے بجائے اب سرچ کمیٹیاں میرٹ پر تعیناتیاں کریں گی۔ ملتان‘ ڈیرہ غازی خان روڈ کی تعمیر کیلئے جلد اقدامات کئے جائیں گے۔ گورنر پنجاب نے چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری خواجہ محمد یونس کی جانب سے دورہ کی دعوت قبول کرلی۔ سابق صوبائی وزیر‘ ایوان تجارت و صنعت ملتان‘ ڈیرہ غازی خان کے سابق صدر خواجہ جلال الدین رومی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چوہدری محمد سرور نے پاکستان کو جی ایس پی پلس کا سٹیٹس (درجہ) دلوایا۔ ان کی خدمات کی بدولت پاکستان کو گزشتہ پانچ سال سے یورپی یونین کے ممالک کی منڈیوں‘ مارکیٹوں تک ڈیوٹی فری رسائی حاصل ہے۔ عمروف صنعتکار نے سرکاری سکولوں کی آڈپشن کرنے کا اعلان کیا۔ پی ٹی آئی کو جنوبی پنجاب سے بھرپور مینڈیٹ ملا اور خطے کے باسیوں‘ بزنس کمیونٹی‘ تاجروں کو امید ہے کہ ان کے مسائل حکومت ترجیحی بنیادوں پر حل کرے گی۔ 800 ایکڑ اراضی پر محیط انڈسٹریل اسٹیٹ ملتان میں 500 سے زائد صنعتیں (انڈسٹریز) لیز پر ہیں ان کو مالکانہ حقوق دیئے جانے چاہئیں۔ مالکان حکومت کو فی ایکڑ مناسب رقم بھی ادا کرنے کو تیار ہیں۔ روزگار کی فراہمی‘ صنعتوں کی ترقی و فروغ کے لئے مالکانہ حقوق کی فراہمی ہونی چاہیے۔ انڈسٹریل سٹیٹ فیز II مالکانہ حقوق کی بنیاد پر چل رہا ہے۔ اسی طرح فیزI کو بھی مالکانہ حقوق حاصل ہونے چاہئیں۔ انڈسٹریل اسٹیٹ کے ریلوے پھاٹک پر اوور ہیڈ برج ہونا چاہیے۔ صنعتی برادری اس پر ٹولنگ کی ادائیگی کرنے کو بھی تیار ہے۔ انڈسٹریل اسٹیٹ فیزIکی گرین بیلٹس پر تجاوزات کا خاتمہ ہونا چاہیے۔ انڈسٹریل اسٹیٹ میں پولیس چوکی اور پولیس چیک پوسٹ قائم کی جائیں۔ ایوان تجارت و صنعت ملتان میں منسٹر آف ایکسی لینس اور ایکسپورٹ ڈسپلے سنٹر کے لئے اراضف فراہم کی جائے۔ ملتان میں 42 واٹر فلٹریشن پلانٹس مقامی بزنس کمیونٹی چلارہی ہے۔ شہریوں کو صاف پانی کی فراہمی کے لئے جلال الدین رومی نے مزید واٹر فلٹریشن پلانٹس صنعت کاروں کی مالی معاونت سے نصب کرنے کا اعلان کیا۔ جلال الدین رومی نے انڈسٹریل اسٹیٹ فیزIII منصوبہ شروع کرنے کا اعلان بھی کیا۔ سابق صوبائی وزیر نے سرکاری سکول کی اون اے سکول (Own a School) اور آڈپشن (Adoption) کرنے‘ ان کا انتظام و انصرام مقامی صنعت کاروں کے ذریعے چلانے اور ان سکولوں کیت علیمی معیار کو انٹرنیشنل سٹینڈرڈ کے مطابق کرنے کا بھی اعلان کیا۔ معروف صنعتکار نے ان سکولوں میں ڈبل شفٹ کے ذریعے تعلیم کے فروغ کی تجویز بھی دی۔ انہوں نے ہکا کہ حکومت نشتر ٹو کے منصوبے پر کام کا آغاز کرے۔ مقامی بزنس کمیونٹی وارڈز تعمیر کرواکر دے گی۔ سابق صوبائی وزیر نے بھرپور احتساب کرنے اور ٹیکس نیٹ میں اضافے کا مطالبہ کیا اور سی پیک کے منصوبے جنوبی پنجاب میں شروع کرنے کا مطالبہ کیا۔ ملتان میں سیوریج نظام کی بدحالی کو بھی بیان کیا۔ گورنر پنجاب نے خواجہ محمد مسعود‘ خواجہ جلال الدین رومی اور ان کے خاندان کی صحت‘ تعلیم اور صاف پانی کی فراہمی کے شعبوں میں خدمات کو خراج تحسین پیش کیا۔ ایوان تجارت و صنعت ڈیرہ غازی خان کے صدر خواجہ محمد یونس نے ملتان‘ ڈیرہ غازی خان روڈ (سڑک) کی تعمیر کو مکمل کرنے کا مطالبہ کیا اور کہا ہے کہ چوہدری محمد سرور‘ عمران خان کے لئے ایک نعمت (Blessing) ہیں۔ ظہرانہ تقریب میں چیف وہپ قومی اسمبلی ملک عامر ڈوگر‘ ایم این اے ملک احمد حسین ڈیہڑ‘ کمشنر ملتان عمران سکندر بلوچ‘ وائس چانسلر بی زیڈ یو ڈاکٹر طاہر امین‘ وائس چانسلر زرعی یونیورسٹی ڈاکٹر راؤ آصف علی‘ ایوان تجارت کے صدر محمد سرفراز‘ نائب صدر شیخ محمد امجد‘ تنویر اے شیخ‘ ڈپٹی کمشنر مدثر ریاض ملک‘ پرو وائس چانسلر نشتر میڈیکل یونیورسٹی ڈاکٹر احمد اعجاز مسعود‘ چیف کمشنر آر ٹی او عابد رضا بودلہ‘ خواجہ محمد اقبول‘ خواجہ محمد الیاس‘ انیس محمد خواجہ‘ محمد محسن خواجہ‘ قربان فاطمہ‘ اعجاز جنجوعہ‘ شیخ احسن رشید‘ ملک اسرار اعوان‘ خالد مسعود خان‘ کمشنر آر ٹی او زبیر بلال‘ مخدوم صلاح الدین جیلانی‘ ڈاکٹر عاشق پرویز‘ ڈاکٹر جاوید وڑائچ‘ میاں قیصر شبیر‘ عاصم شاہ‘ سہیل محمود ہرل‘ راؤ صدرالدین‘ چوہدری خالد بشیر‘ شیخ محمد سعید‘ میاں رحمن نسیم‘ شاکر حسین شاکر سمیت ایوان تجارت و صنعت ملتان‘ ڈیرہ غازی خان‘ بہاولپور کے عہدیدار‘ نمائندگان‘ آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن (اپٹما)‘ آل پاکستان سالونٹ ایسوسی ایشن‘ آل پاکستان آئل ملز ایسوسی ایشن‘ آل پاکستان بیڈ شیٹ اینڈ اپ ہولسٹری ایسوسی ایشن‘ پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن کے عہدیداروں‘ تاجر تنظیموں کے نمائندگان‘ وومن چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری‘ وکلاء‘ صنعتی و تجارتی تنظیموں کے عہدیداروں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ گونر پنجاب چوہدری محمد سرور نے بزنس کمیونٹی کی نمائندہ شخصیات کی اتنی بڑی تعداد میں شرکت کو اپنی پذیرائی قرار دیتے ہوئے شکریہ ادا کیا اور کہا کہ پی ٹی آئی تمام شہریوں‘ تاجروں‘ صنعت کاروں کے اعتماد پر پورا اترے گی۔مزید برآں گورنر پنجاب نے کہا کہ عثمان بزدار صوبے کو چلا رہے ہیں اور وہی فیصلے کرتے ہیں جنوبی پنجاب کو صوبہ بنانے کے لئے ہم نے کمیٹی بنا دی ہے انشاء اللہ جلد جنوبی پنجاب صوبہ بنے گاان خیا لات کا اظہار انہوں نے ممتاز صعنت کار خواجہ جلال الدین رومی کی رہائش گاہ پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ ماضی میں ضمنی الیکشن میں سرکاری مشینری استعمال ہوتی تھی مگر ہم نے پارٹی مفادات کی بجائے اصولوں کو ترجیح دی پچھلے الیکشن شفاف ہوئے اب ضمنی الیکشن بھی شفاف ہوئے ہیں،انہوں نے مذید کہا کہ سابقہ حکومت نے قرضے لے کر انہیں عوام کے لئے استعمال نہیں کئے ہمارے پاس جادو کی چھڑی نہیں ہے کہ ہم سابق حکومتوں کے قرضے اتار سکیں ہماری کوششیں جاری ہیں ۔انشا ء اللہ آنے والا وقت عوام کے لئے بہتری کا وقت ہو گا انہوں نے کہا کہ ماضی میں یونیورسٹیوں میں سیاسی بنیادوں پر وائس چانسلر تعینات کئے جاتے تھے اب ایسا نہیں ہو گا اور ہر تعیاتی میرٹ پر ہو گی انہوں نے کہا کہ تجاوزات کے خلاف بڑے بڑے مگر مچھوں کے خلاف بھی کاروائی جاری ہے پنجاب کو تجاوزات مافیا سے پاک کریں گے۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -