پائیدار واٹر گورننس پر مبنی سماجی سوچ کو عالمی دھارے میں لانا وقت کی ضرورت: ماہرین 

  پائیدار واٹر گورننس پر مبنی سماجی سوچ کو عالمی دھارے میں لانا وقت کی ضرورت: ...

  

  اسلام آباد (این این آئی)گھانا، اردن، عمان، پاکستان، اور ترکی کے عالمی سطح کے ماہرین نے موسمیاتی اور پائیدارترقیاتی اہداف کے حصول کیلئے کامسیٹس کے زیر اہتمام منعقدہ ایک بین الاقوامی ویب نار میں اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ دنیا بھر میں کسی بھی سماجی ڈھانچے کی وضاحت (پیرا میٹرز) سمیت، پالیسی بنانے اوراْس پالیسی کے موثرنفاذ، ضروری قانون سازی،شواہدپر مبنی پالیسیوں کی خاطر علمی نظم و نسق کی فراہمی اورپانی سے متعلق سیاسی،معاشرتی، معاشی اور انتظامی سطح پر موجودوہ نظامت(جوپانی کے استعمال اور انتظامات پر اثر اندازہو سکتی ہے)کو متعلقہ شراکت داروں اورپانی سے متعلق حکمرانی کے تصور پر مبنی آراء کے حامل نقطہ نظر رکھنے والی سماجی سوچ کوعالمی دھارے میں لاناہوگا۔ماہرین نے جامع اور پائیدار ترقیاتی اہداف کے حصول کیلئے کامسیٹس (سائنس اور ٹیکنا لو جی کمیشن)کے ویب نار کو عصر حاضر میں نہایت اہمیت کا حامل قرار دیا، جس کا موضوع ”بدلتی ہوئی آب و ہوا کے تحت عالمی سطح پر پائیدار واٹر گورننس“ تھا۔ ماہرین نے موسمیاتی اور پائیدارترقی کیلئے کامسیٹس سینٹر(سی سی سی ایس) میں اس ویب نار کے پلیٹ فارم میں اپنے آئیڈیاز، تجربات،جامع طریقہ کار اور پالیسی اقدامات پر بھرپور تبادلہ خیال کیا۔اس ویب نار میں سامنے آنے والی سفارشات میں اس بات پر زور دیا گیا کہ کیمونٹی پر مبنی واٹر گورننس، واٹر میٹرنگ اور احتساب، عوامی سطح پر نجی شراکت داری کی مضبوطی،اداروں اورشراکت داروں کی صلاحیت میں ا ضافے کی ترجیحات،ترقی یافتہ اور نئی ٹیکنالوجیز کے انضمام کا فروغ اور جدت طرازی کے حل تلاش کرنے کے لیے حکمرانی کے نظام پر ہونے والی تحقیق کو مزید مربوط بناناچاہئے۔

واٹر گورننس 

مزید :

صفحہ آخر -