بدعنوانی عناصر کو کٹہرے میں کھڑا کرینگے، قانون اپنا راستہ خو د بنائیگا: چیئر مین نیب 

          بدعنوانی عناصر کو کٹہرے میں کھڑا کرینگے، قانون اپنا راستہ خو د ...

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے کہا ہے کہ قومی ادارہ بدعنوان عناصر کو انصاف کے کٹہرے میں لانے کیلئے پرعزم ہے۔نیب کی جانب سے جاری اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ چیئرمین نے اعلیٰ سطح اجلاس طلب کر لیا ہے جس میں ڈپٹی چیئرمین، پراسیکیوٹر جنرل اور ڈی جیز شریک ہونگے۔چیئرمین نیب نے کہا کہ نیب واحد ادارہ ہے جس نے سی پیک منصوبوں کی نگرانی کے لئے چین کے ساتھ مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کئے۔ اس کے علاوہ نوجوانوں کو بدعنوانی کے برے اثرات سے آگاہ کرنے کیلئے ہائیر ایجوکیشن کمیشن کے ساتھ مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کئے۔ پاکستان سارک اینٹی کرپشن فورم کا پہلا چیئرمین ہے جو کہ نیب کی شاندار کارکردگی کا اعتراف ہے۔ نیب آرڈیننس 1999ء کے اقتباس میں نیب کو بدعنوانی کے خاتمہ اور لوٹی گئی رقم وصول کرنے کی ذمہ داری دی گئی ہے۔ نیب نے اپنے قیام سے لے کر اب تک بدعنوان عناصر سے لوٹے گئے 466 ارب روپے وصول کرکے قومی خزانہ میں جمع کرائے ہیں۔نیب کے مقدمات میں سزا کی شرح ملک کے کسی بھی اینٹی کرپشن کے ادارے کے مقابلہ میں بہترین کارکردگی ہے۔ اعلامیہ میں واضح کیا گیا ہے کہ نیب کا تعلق کسی سیاسی جماعت، گروہ اور فرد سے نہیں بلکہ صرف اور صرف ریاست پاکستان سے ہے۔ چئیرمین نیب نے ہدایات جاری کی ہیں کہ مفرور اور اشتہاری ملزمان کی گرفتاری کے لئے قانون کے مطابق اقدامات اٹھائے جائیں۔ بدعنوان عناصر کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کیا جائے، جہاں قانون اپنا راستہ خود بنائے گا۔

چیئرمین نیب

مزید :

صفحہ اول -