حکومت زرعی سیکٹر، کسانوں کی خوشحالی کیلئے پرعزم، سید فخرامام 

      حکومت زرعی سیکٹر، کسانوں کی خوشحالی کیلئے پرعزم، سید فخرامام 

  

 کبیروالا(تحصیل رپورٹر)ملکی معیشت کے استحکام کیلئے زراعت کی ترقی کلیدی اہمیت رکھتی ہے،حکومت پاکستان زرعی شعبہ کی ترقی کے لیے پُر عزم ہے اور کسانوں کی ترقی اور خوشحالی میں کوئی کسر اُٹھا نہ رکھی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کسانوں کے لیے آسان (بقیہ نمبر27صفحہ6پر)

پالیسیاں بنا رہی ہے،جس کامقصدانہیں نئی ٹیکنالوجی کی فراہمی اور تصدیق شدہ بیج تک رسائی کو یقینی بنانا ہے تا کہ وہ اپنے معیار زندگی کو بہتر بنانے کے ساتھ ساتھ ملکی معشیت کے استحکام میں اپنا کردار ادا کریں،ان خیالات کا اظہاروفاقی وزیر برائے قومی تحفظ خوراک و تحقیق سید فخر امام نے موضع مولاپور میں سید گروپ کے مرکزی رہنما اور سابق ناظم یونین کونسل مولاپور مہر مجاہد حسین اُتراکے بھانجے مہر بلال اعجاز اُتراکی شادی میں شرکت،کبیروالا شہر میں ممبر ڈویژنل امن کمیٹی سید سہیل عابد ی کی بھاوج،سابق صدربار ایسوسی ایشن کبیروالا راؤ اقرار احمد کے والدراؤ محمد اقبال،تاجر رہنما حاجی عبدالرحمن مرحوم کے جواں سالہ بیٹے حافظ شیخ محمد فاروق،تاجر محمد نعیم کے جوان سالہ بیٹے معروف فٹبالر نوید راجہ کی وفات پر ان کی رہائش گاہوں پر لواحقین سے اظہار تعزیت اور مرحومین کی روح کے ایصال ثواب کیلئے فاتحہ خوانی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے ملک میں گندم اور کپاس کی موجودہ صورتحال کے بارے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہماری فصلوں کی کم پیداوار کا سب سے بڑی وجہ فرسودہ بیج ٹیکنالوجی ہے،علاوہ ازیں موسمیاتی تبدیلی نے اس سال ہماری زراعت کو نقصان پہنچایا ہے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ کپاس ہماری قومی معیشت میں بہت اہم کردار ادا کر سکتی ہے۔ سید فخر امام نے کمیٹی کو بتایا کہ اس سال ہمارے پاس 1.5میگا ٹن گندم کم تھی، جس کے باعث نجی اداروں کو گندم درآمد کرنے کی اجازت دی گئی،430000ٹن امپورٹڈ گندم پہنچ چکی ہے اور باقی بھی جلد پاکستان پہنچ جائے گی۔۔ ا س موقع پر سید منتظر مہدی،شیخ راشد ندیم،جاوید خان پڑھیار،سید احتشام رضا،سید فرخ رضا،مہر عمران محمود اُترا،حاجی محمد ارشد سنگا،سردار عاطف سہو،رانا عابد مصطفےٰ،محمد رفیق بھٹہ اور دیگر بھی ان کے ہمراہ تھے۔

فخرامام

مزید :

ملتان صفحہ آخر -