حقوق کراچی تحریک: 27اکتوبر کو لائحہ عمل کا اعلان کرینگے: حافظ نعیم الرحمن 

حقوق کراچی تحریک: 27اکتوبر کو لائحہ عمل کا اعلان کرینگے: حافظ نعیم الرحمن 

  

 کراچی(اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ سندھ حکومت نے شہر کو تباہ کرکے رکھ دیا ہے، کراچی کے عوام ان کرپٹ حکمرانوں سے نفرت کرتے ہیں، ان سے جان چھڑانے کے لیے میدان عمل میں آچکے ہیں، کراچی کے مسائل کے حل کے لیے جماعت اسلامی کی قیادت کو آگے لایا جائے، کراچی ریفرنڈم میں شہر بھر کے 98.6فیصد عوام نے کراچی کے حوالے سے مطالبات کے حق میں ووٹ کاسٹ کیا ہے، جو اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ عوام تمام نسلی، لسانی، مذہبی تفریق سے بالاتر ہوکر جماعت اسلامی سے شہر کے مسائل کے حل کے لیے توقعات وابستہ کر رہے ہیں، عوام کا فیصلہ آچکا اب 27اکتوبر کو آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے۔  ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اسلامی ضلع شرقی فیصل کینٹ گلستان جوہر کے تحت حقوق کراچی کنونشن و مشاورتی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر بلدیہ عظمیٰ کراچی میں جماعت اسلامی کے سابق پارلیمانی لیڈر جنید مکاتی، نائب امیر ضلع شرقی نعیم اختر،صدر پبلک ایڈ ضلع شرقی سید قطب احمد،ناظم علاقہ نصر عثمانی، سیکریٹری اطلاعات زائد عسکری، سابق یوسی چیئر مین عزیز صدیقی، صدر جے آئی یوتھ بلال وارثی اور دیگر بھی موجود تھے۔ جبکہ افضال احمد اور ڈاکٹر امان اللہ نے قرار داد پیش کی،جس میں گلستان جوہر میں صاف پانی کی فراہمی، نکاسی آب کے نظام کو ٹھیک کرنے، پارکس اور کھیلوں کے میدان کی تعمیر اور درستگی، گلستان جوہر میں سرکاری اسپتال کا قیام، شہریوں کو سستی ٹرانسپورٹ کی فراہمی یقینی بنانے اور بس کا روٹ گلستان جوہر سے گزارنے، مین روڈ اور سڑکوں کی تعمیر، اسٹریٹ لائٹس کی تنصیب و مرمت،جوہر چورنگی اوور ہیڈ برج کی تعمیر، جوہر نالے کی تعمیر، علاقے میں نئے قبرستان کی تعمیر اور علاقے کے مسائل کے حل کو یقینی بنانے کیلئے، شرکاء  نے کثرت رائے سے قرار داد منظور کی۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ ”کراچی ریفرنڈم“ میں ہر طبقہ فکر سے وابستہ افراد نے جماعت اسلامی پر اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے حصہ لیا۔انہوں نے کہا کہ شہر کی صورتحال خراب ہوتی جارہی ہے، جگہ جگہ کچرے کے ڈھیر موجود ہیں،نالوں کی صفائی اور سیوریج کا کوئی نظام موجود نہیں ہے،شہریوں کا کوئی والی وارث نہیں،کراچی میں تمام مسائل کا حل بااختیار شہری حکومت کا قیام ہے، جماعت اسلامی شہریوں کی آواز کو حکمرانوں اور ایوانوں تک پہنچانے کی صلاحیت رکھتی ہے، جماعت اسلامی نے کراچی کے عوام کے احساسات و جذبات کی ترجمانی کی ہے، کراچی کو اس کا حق دلوانے تک جماعت اسلامی کی تحریک اور جدو جہد جاری رہے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ کراچی کو پی ٹی آئی،پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم نے تباہ کر دیا، تینوں جماعتیں کراچی سے ووٹ لیکر اقتدار میں آئیں، لیکن کسی ایک پارٹی نے شہر کے مسائل حل نہیں کیے، جماعت اسلامی نے ماضی میں بھی عوام کی خدمت اور مسائل کے حل کی جدوجہد کی ہے اور آئندہ بھی کرتی رہے گی، یہ وقت خاموش بیٹھنے کا نہیں ہے، عوام کو اپنے حقوق کے لئے آواز بلند کرنا ہوگی۔انہوں نے مزید کہا کہ ہمارا مطالبہ ہے کہ شہر کی آبادی کو پورا گنا جائے، کراچی میں بلدیاتی الیکشن کیلئے حلقہ بندیاں نہ کرنے کا مقصدعوام سے ان کا مینڈیٹ چرانا ہے، سندھ حکومت حلقہ بندیوں کو جواز بنا کر الیکشن میں روڑے اٹکا نا چاہتی ہے، کراچی میگا سٹی ہے، اگر حکومتی اعداد و شمار کے مطابق کراچی کی آبادی کا موازانہ کیا جائے تو یہ دنیا کے 150شہروں سے زیادہ آبادی والا شہر ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ شہری اداروں میں اختیارات کی بندر بانٹ کی وجہ سے شہریوں کے مسائل میں اضافہ ہوا ہے، کوٹہ سسٹم ختم کرکے کراچی کے شہریوں کو میرٹ کی بنیاد پر ملازمتیں دی جائیں،جماعت اسلامی کراچی کے نوجوانوں کوروزگار سے محروم نہیں ہونے دے گی۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ جماعت اسلامی نے کورونا وائرس اور بارش سمیت ہر مشکل گھڑی میں عوام کی خدمت اور متاثر ین کی دادرسی کی، جب کہ حکومت عملی اقدمات کے بجائے صرف سیاست کرتی رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جماعت اسلامی جوہر چورنگی تا پہلوان گوٹھ نالے کی تعمیر کے لیے عوامی فضا ساز گار بنانے اور اس مسئلے کو حل کروانے کے لیے ہر ممکن کوشش کرے گی،جماعت اسلامی نے اس سے قبل یونیورسٹی روڈ کی تعمیر کیلئے جدوجہد کی تھی، جس کے نتیجہ میں اس کی تعمیر مکمل ہوئی۔  انہوں نے مزید کہا کہ جماعت اسلامی کو جب بھی شہر کی خدمت کا موقع ملا، ہم نے شہریوں کو ریلیف فراہم کیا۔ نصر عثمانی نے کہا کہ اداروں کے اختیارات کا تعین نہ ہونے کی وجہ سے مسائل حل نہیں ہو رہے ہیں،جوہر چورنگی تا پہلوان گوٹھ نالے کا مسئلہ گزشتہ 15سال سے اب تک اذیت کا سبب بنا ہوا ہے، جماعت اسلامی اس دیرینہ مسئلہ کو حل کرائے گی۔ حقوق کراچی کنونشن سے جنرل سیکریٹری روفی لیک ویو بدرالزمان،سابق صدر پیاسی یونین نجیب الرحمن، مون گارڈن کے سید محمد عمران،پی آئی اے سوسائٹی کے محمد شکیل خان، بسمہ ریزیڈنسی یونین کے صدر عبدالرحمن خان رحمانی، لطیفی سوسائٹی کے تجمل حسین چشتی، شمس کمپلکس کے وقاص منور،شمائل گارڈن کے راجہ ابرار، شالیمار شاپنگ سینٹر کے احتشام علی سمیت علاقہ معززین، علماء  اکرام، آئمہ مساجد اور تاجر برادری کے نمائندوں نے بھی اظہار خیال کیا۔ #

مزید :

صفحہ آخر -