”پاکستان کی فیلڈنگ اس وقت تک بہتر نہیں ہو سکتی جب تک فٹنس بہتر نہ ہو جائے“ ہیڈ آف ہائی پرفارمنس کوچنگ گرانٹ بریڈ برن نے فیلڈنگ بہتری کے نسخے کیساتھ اپنی پسندیدہ ڈش کے بارے میں بھی بتا دیا

”پاکستان کی فیلڈنگ اس وقت تک بہتر نہیں ہو سکتی جب تک فٹنس بہتر نہ ہو جائے“ ...
”پاکستان کی فیلڈنگ اس وقت تک بہتر نہیں ہو سکتی جب تک فٹنس بہتر نہ ہو جائے“ ہیڈ آف ہائی پرفارمنس کوچنگ گرانٹ بریڈ برن نے فیلڈنگ بہتری کے نسخے کیساتھ اپنی پسندیدہ ڈش کے بارے میں بھی بتا دیا
کیپشن:    سورس:   Twitter

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق فیلڈنگ کوچ اور ہیڈ آف ہائی پرفامنس کوچنگ گرانٹ بریڈ برن نے کہا ہے کہ مجھے پاکستان کی دال مٹن بہت پسند ہے جبکہ پاکستانی کرکٹرز کی فیلڈنگ اس وقت تک بہتر نہیں ہو سکتی جب تک ان کی فٹنس بہتر نہیں ہو جاتی۔ 

تفصیلات کے مطابق نجی خبر رساں ادارے جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ پاکستان ٹیم کی رینکنگ وہ نہیں ہے جتنا کرکٹرز میں ٹیلنٹ ہے، ٹیسٹ اور ون ڈے میں ٹاپ فائیو میں شامل کرنے اور ٹی 20 میں ایک بار پھر پہلی پوزیشن حاصل کرنے کیلئے کوچز کو بہت کام کرنا ہے۔

گرانٹ بریڈ برن 18 ماہ پاکستان ٹیم کے فیلڈنگ کوچ رہے ہیں اور اس کے بعد جب پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے نیشنل کرکٹ اکیڈمی اور شعبہ ڈومیسٹک کرکٹ کی ری سٹرکچرنگ کی تو نیشنل ہائی پرفارمنس سینٹر قائم کیا اور اس میں نئی تقرریاں کیں۔ 

نیوزی لینڈ سے تعلق رکھنے والے گرانٹ بریڈ برن نے کہا کہ پاکستان ٹیم کے ساتھ 18 ماہ گزارنا اعزاز اور ہائی پرفارمنس سینٹر میں نئی ذمہ داریاں نبھانے پر فخر ہے، ہماری ذمہ داری ہے کہ ہم کوچز کو جدید علم کے مطابق کوچنگ کیلئے تیار کریں تاکہ وہ اس علم کو کھلاڑیوں میں ٹرانسفر کریں اور کھلاڑی تسلسل کے ساتھ پرفارم کریں جس سے پہلے ملک، پھر ٹیم اور پھر کھلاڑیوں کو انفرادی طور پر فائدہ ہو۔

سابق فیلڈنگ کوچ گرانٹ بریڈ برن فیلڈنگ کے معیار سے خوش نہیں ہیں جن کا کہنا ہے کہ یقینی طور پر ابھی نیشنل ٹی 20 کپ میں فیلڈنگ بہت کمزور تھی، اس کیلئے فٹنس کا اچھا ہونا بہت ضروری ہے اور فٹنس اور فیلڈنگ کا گہرا تعلق ہے، فٹنس اچھی ہو گی تو فیلڈنگ بہتر ہو گی، اس کے علاوہ ہمیں اپنے فیلڈنگ کوچز کے معیار کو بڑھانا ہے۔

مزید :

کھیل -