چارسدہ،ٹی ایم اے میں اندھیر نگری چوپٹ راج

  چارسدہ،ٹی ایم اے میں اندھیر نگری چوپٹ راج

  

چارسدہ(بیورورپورٹ) ٹی ایم اے چارسدہ میں اندھیر نگری چوپٹ راج، کنٹریکٹر کی جانب سے سائن بورڈ لگانے والوں سے لاکھوں روپے ٹیکس جمع کیا جار ہا ہے لیکن ٹی ایم اے کے پاس کوئی ریکارڈ موجود نہیں۔ سپریم کورٹ کی جانب تمام بڑے بل بورڈز کو ہٹانے کے واضح احکامات کے باوجود کنٹریکٹر کو نوازنے کے لئے ٹی ایم اے کی جانب سے ان بل بوڈز کے خلاف کاروائی عمل میں نہیں لائی جارہی ہے۔ چارسدہ کے عوام نے چیف سیکرٹری سمیت سیکرٹری لوکل گورنمنٹ سے نوٹس لینے اور غیر قانونی طور پر ٹیکس جمع کرنے کے خلاف انکوائری کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق چارسدہ میں ٹی ایم اے کی جانب سے ریونیو بڑھانے کے لئے غیر قانونی طریقوں کا سہارا لیا جا رہا ہے۔ ٹی ایم اے کی جانب سے کنٹریکٹر کو غیر قانونی ٹیکس جمع کرنے کے احتیارات دی گئے ہیں جس پر عوام نے اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ ٹی ایم اے کی جانب سے بڑے بڑے بل بوڈز لگانے والوں سے 70سے لیکر 80روپے مربع فٹ سالانہ کے حساب سے  ٹیکس جمع کرنے کا نوٹیفکیشن جمع کیا گیا ہے جس کا ٹھیکہ مذکورہ کنٹریکٹر نے 25لاکھ روپے میں حاصل کیا ہے لیکن مذکورہ کنٹریکٹر کی جانب سے تمام چھوٹے چھوٹے بوڈز لگانے والوں سے ہزاروں روپے ٹیکس جمع کیا جار ہا ہے جس کا ٹی ایم اے کے پاس کوئی ریکارڈ موجود نہیں۔ اس حوالے سے ٹی ایم اے آفیسر کے مطابق مذکورہ ٹیکس بڑے بڑے بل بورڈز لگانے والے بل بوڈز کے مالکان پر عائد ہوتا ہے جس سے سالانہ 70روپے سے 80 روپے فی مربع فٹ کے حساب سے ٹیکس جمع کیا جائے گا جس کا صارف کو باقاعدہ رسید دیا جائے گا لیکن عملی طور پر کنٹریکٹرز کی جانب سے ایسے صارفین کو بھی ہزاروں روپے جمع کرنے کے نوٹسز جاری کی گئے ہیں جنہوں نے اپنے ذاتی دکان پر  چھوٹے بڑے بوڈز لگائے ہیں۔ قواعد وضوابط کے مطابق ٹیکس صرف میونسپل حدود سے جمع کیا جائے گا لیکن مذکورہ کنٹریکٹر ز تحصیل چارسدہ کے 25 یونین کونسلوں سے ٹیکس جمع کروا رہا ہے جو کہ ایک غیر قانونی فعل ہے۔ دوسری جانب من پسند کنٹریکٹر کو فائدہ پہنچانے کے لئے ٹی ایم اے چارسدہ خود غیر قانونی اقدام کا حصہ بن رہی ہے، سپریم کورٹ کے واضح احکامات کے باوجود ٹی ایم اے کی جانب سے شاہراوں کے کنارے نصب بڑے بڑے بل بوڈز کے  خلاف کسی قسم کی کاروائی عمل میں نہیں لائی جارہی  جو موسمی شدت کے دوران کسی بھی بڑے حادثہ کا سبب بن سکتے  ہیں۔ اس حوالے سے ٹی ایم اے کے انکروچمنٹ آفیسر کے مطابق سپریم کورٹ کے احکامات موجود ہیں لیکن ان بل بوڈز سے ٹی ایم اے کو ریونیو جمع ہو رہی ہے اس لئے تاحال اس کے خلاف آپریش عمل میں نہیں لایا جا رہا ہے۔ اس حوالے سے چارسدہ کے عوام نے ڈپٹی کمشنر سمیت چیف سیکرٹری اور وزیراعلیٰ  اور سیکرٹری لوکل گورنمنٹ سے  نوٹس لینے اور ٹی ایم اے چارسدہ میں اندھیر نگری چوپٹ راج کو بند کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -