لاہور ہائیکورٹ:توہین عدالت کی درخواست پر سماعت، لیڈی ڈاکٹر کو ملازمت پر بحال اور تنخواہیں دینے کا حکم

 لاہور ہائیکورٹ:توہین عدالت کی درخواست پر سماعت، لیڈی ڈاکٹر کو ملازمت پر ...

  

 

 ملتان (خصو صی  ر پو رٹر)لاہور ہائیکورٹ ملتان بنچ کے جج مسٹر جسٹس سلطان تنویر احمد نے عدالت عالیہ کے حکم کے باوجود لیڈی ڈاکٹر کو ریگولرائز نہ کرنے اور الٹا اسکی تنخواہ روک دینے کے خلاف توہین عدالت کی رٹ پر سماعت کرتے ہوئے ملازمت پر بحال کرنے(بقیہ نمبر47صفحہ6پر)

 اور تنخواہ جاری کرنے کے احکامات دیے تھے لیکن صوبائی سیکرٹری نے درخواست خارج کردی جس پر دوبارہ رجوع کیا گیا ہے۔عدالت عالیہ نے صوبائی سیکرٹری، سی ای او ہیلتھ اتھارٹی لیہ اور ایم ایس ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت 27 اکتوبر تک ملتوی کرنے کا حکم دیا۔ قبل ازیں عدالت عالیہ میں ڈاکٹر زرغونہ رباب نے کونسل محمد عامر خان بھٹہ کے ذریعے درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ جولائی 2017 میں پنجاب پبلک سروس کمیشن کا امتحان پاس کرکے عارضی بنیادوں پر بھرتی ہوئی کافی وقت گزرنے کے بعد مستقل نہیں کیا گیا جبکہ اس وقت بھرتی ہونے والے دیگر فارماسسٹ کو ریگولر کردیا گیا، عدالت عالیہ نے مستقل کرنے کی درخواست کو اپیل بناکر صوبائی سیکرٹری ہیلتھ کو بھجوایا تھا اور ایک ماہ میں داد رسی کی ہدایت کی تھی۔عدالت نے ہدایت دی تھی کہ دوران پیٹشنر کے خلاف کوئی منفی ایکشن نہ لیا جائے لیکن اسکی تنخواہ روک دی گئی تھی اور اب درخواست بھی خارج کردی گئی ہے۔

حکم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -