زکریا یونیورسٹی: شعبہ سوشیالوجی کے زیراہتمام تھلیسیمیاسے آگاہی کیلئے واک

زکریا یونیورسٹی: شعبہ سوشیالوجی کے زیراہتمام تھلیسیمیاسے آگاہی کیلئے واک

  

ملتان(سٹی رپورٹر)بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی ملتان شعبہ سو شیالوجی کے زیر اہتمام تھیلسیما کی آگا ہی اور روک تھام کے لیے سمینا ر کا انعقاد کیا گیا جس کی صدارت وائس چا نسلر بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی ملتان منصور اکبر کنڈی نے کی،سمینار میں چلڈرن ہسپتال کے سابق ڈین  پروفیسر ڈاکٹر وقار ربا نی، تھیلسیما و ہمیو فیلیاسنٹر کے سربراہ ڈاکٹر محمد اسلم شیخ، کینسر وارڈ کے (بقیہ نمبر45صفحہ6پر)

سربراہ ڈاکٹر ذولفقار رانا،سنیئر میڈیکل آفیسر میڈ یکل سنٹر ڈاکٹر سمینہ وسیم،ڈاکٹر مرید حسین ملک،لائنز کلب انٹر نیشنل پاکستان کے سابق سربراہ امحمدافضل سپرا،ایڈ منسٹیرلفینٹ (ر)کرنل  جاوید احمد فاطمید فانڈ یشن،احمد ندیم خا لد خان ریجنل پروگرام کودانیٹر پنجاب تھیلسیما اینڈ منیٹک ڈس آرڈرریسرچ انسٹیوٹ  نے شرکت کی جبکہ ڈاکٹر کا مران اشفاق سربرا شعبہ سو شیالوجی بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی نے خطاب کرتے ہو ئے کہا  تھیلسیما کی آگا ہی اور روک تھام کے لیے سمینا ر کا انعقاد مقصد یونیورسٹی میں 350000سے ذیادہ طلباء وطالبات زیر تعلیم ہیں تھیلسیما کی آگا ہی اور روک تھام کے لیے ہر ڈیپارٹمنٹ میں سمینا ر منعقد کئے جا ئیں گے تاکہ، تھیلسیما کی آگا ہی کو تما م طلباء وطالبات تک پہنچایا جا ئے ہر سا؛ل 5000ہزار سے ذیاہ بچے تھیلسیما کے مرض کا شکا ر ہو رہے ہیں جو پوری زندگی بلڈ کے سہارے زندہ رہتے ہیں پوری دنیا نے اس بیماری کو  آگا ہی مہم کے زریعے کنٹرول کیا ہے، پا کستان میں کزن میرج کی وجہ سے اس میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے۔ وائس چا نسلر بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی ملتان منصور اکبر کنڈی نے کہا تھیلسیماکے شکا ر بچوں کے خون کے عطیات دینے کے لیے طلباء وطالبات بڑھ چڑ ھ کر حصہ لیں تاکہ ان کا علاج جاری رہیے طلباء وطالبات خدمت کے جذبہ کے ساتھ امدادی سر گرمیوں بڑھ چڑ ھ کر حصہ لیں،ڈاکٹر عمران شریف چوہدری نے کہا شعبہ سو شیالوجی ڈیپارٹمنٹ نے معاشرتی مسائل کو اُجا گر کرنے میں اہم کردار ادا کر رہا ہے اور جس طرح  شیالوجی ڈیپارٹمنٹ  نے سمنیار منعقد کیا ہے اس طرح کے سمنیار کے دائرکا ر بڑھایا جا ئے تاکہ تھیلسمیا کی روک تھام ممکن ہو سکے۔محمد افضل سپر انے کہا ہے کہ لا ئنز کلب شعبہ سو شیالوجی ڈیپارٹمنٹ  ساتھ ہر قسم کے تعاون کے ان کے شانہ بشانہ ساتھ ہے شعبہ سو شیالوجی ڈیپارٹمنٹ باقی سماجی اداروں کے ساتھ روابط قائم کرے تاکہ اس اس کی آگا ہی مہم ہر جگہ پھیل سکے،اُنھوں نے مزید کہا تھیسلمیا کا شکار بچہ والدین کے لیے بوجھ بن جا تا ہے اُس بچہ کو ادویات اور بلڈ کی ضرورت ہو تی ہے جو افراد اس کا خرچ برداشت نہیں کر سکتے اُس کے لیے ہم سب مل کر اس کا ز کے لیے کام کریں۔ ڈاکٹر اسلم شیخ نے کہا چلڈرن ہسپتال میں تھیلسمیا کے تین سو بچے رجسٹرڈ ہیں  آوٹ دور کی بنیاد پر 500بچوں کو ادویات اور بلڈ دیا جا رہا ہے  ہمیں چا ہیے تھیلسمیا کی روک تھام کے لیے معا شرے میں شعو ر آگا ہی کو فروغ دیں تاکہ ہمارا معاشرہ تھیسلمیا کے مرض سے پا ک ہو سکے۔ڈاکٹر احمد ندیم خان نے کہا تھیلسمیا پرونشن پروگرام  اس خطے کے لیے بہت بڑی نعمت ہیہمارا مشن ہے اس پروگرام کو گھر گھر پہنچا ئیں  تا پاکستا ن کو تھلیمسیا  کے مرض سے چھٹکارہ  حاصل کر سکیں۔اس موقع پر ڈاکٹر مرید حسین،لفینٹ (ر)کرنل  جاوید احمد فاطمید فانڈ یشن،ڈاکٹر صائمہ افضل ڈاکٹر امیتاز ورائچ،ڈاکٹر تحمنیہ ستار،گوہر عباس،ریجنل بلڈ سنٹر سے محمد رمضان،اور محمد محسن نے بلڈدونیشن کیمپ لگایا جسمیں  طلباء وطالبات نے تھلیسمیا کے بچوں کے لیے خون کے عطیات دئیے۔

واک

مزید :

ملتان صفحہ آخر -