” آپ نائٹ کلب اور کیسینو بھی کھول لیں “ سپریم کورٹ سول ایوی ایشن پر برہم، فضائی آپریشن کے علاوہ دیگر سرگرمیاں روکنے کا حکم 

” آپ نائٹ کلب اور کیسینو بھی کھول لیں “ سپریم کورٹ سول ایوی ایشن پر برہم، ...
” آپ نائٹ کلب اور کیسینو بھی کھول لیں “ سپریم کورٹ سول ایوی ایشن پر برہم، فضائی آپریشن کے علاوہ دیگر سرگرمیاں روکنے کا حکم 

  

 کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن ) سپریم کورٹ نے سول ایوی ایشن کو فضائی آپریشن کے علاوہ دیگر کمرشل سرگرمیوں سے روک دیا ہے ۔

سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں جسٹس اعجاز الاحسن، جسٹس قاضی محمد امین احمد پر مشتمل 3 رکنی بینچ نے سول ایوی ایشن اراضی کیس کی سماعت کی۔ عدالت نے سول ایوی ایشن کو فضائی آپریشن کے علاوہ دیگر کمرشل سرگرمیوں سے روک دیا۔ عدالت نے ریمارکس دیئے کہ شادی ہالز چلانا سول ایوی ایشن کا کام نہیں، سول ایوی ایشن اپنی اراضی پر سول ایوی ایشن سے متعلق ہی کام کرے۔

دوران سماعت فاضل جج صاحبان نے ریمارکس دیئے کہ کیا پی آئی اے ہوتی تھی کیا کراچی ہوتا تھا، آپ لوگوں نے ائیر پورٹس کو کیا سے کیا بنا دیا، کیا دنیا میں سول ایوی ایشن شادی ہالز چلاتی ہے، کیا ہیتھرو ائیر پورٹ پر شادی ہالز ہیں، آپ پھر نائٹ کلب اور کیسینو بھی کھول لیں، اپنے مقاصد سے ہٹ کر تمام سرگرمیاں بند کریں۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -