آئیے مسکرائیں 

آئیے مسکرائیں 

  

٭دادا جان نے ٹھنڈی آہ بھرتے ہوئے پوتے سے کہا۔آج کل کی لڑکیاں تو کسی بات پر نہیں شرماتیں،ہمارا زمانہ اور تھا چھوٹی چھوٹی باتوں پر لڑکیوں کے چہرے شرم سے سرخ ہو جاتے تھے۔

پوتا: کیا آپ وہ چھوٹی چھوٹی باتیں بتانا پسند کریں گے دادا جان۔۔۔۔

٭بیوی: میں نے کہا جی! تم مجھ سے کتنی محبت کرتے ہو؟

شوہر: اتنی محبت جتنی شاہ جہاں کو ممتاز سے تھی

بیوی: (خوشی سے) اوہ سچی؟ تو کیا تم میرے مرنے کے بعد میری یاد میں تاج محل بنواؤ گے؟

شوہر: میری جان میں نے تو پلاٹ خرید بھی لیا ہے۔ اب تمہاری طرف سے ہی دیر ہے۔

٭ایک سیاسی رہنما نے اپنے دوست سے کہا:“ میں صرف اپنی جوانی کی وجہ سے الیکشن ہار گیا۔“

دوست بولا؛“ مگر تمہاری جوانی تو گزر چکی۔“

سیاسی رہنما؛ ٹھیک ہے مگر ووٹروں کو علم ہوگیا کہ کیسی گزری“۔

مزید :

ایڈیشن 1 -