شیخوپورہ، ڈکیتی مزاحمت پر زخمی نوجوان دم توڑ گیا،ورثا کا لاش سڑک پررکھ کر احتجاج 

شیخوپورہ، ڈکیتی مزاحمت پر زخمی نوجوان دم توڑ گیا،ورثا کا لاش سڑک پررکھ کر ...

  

 شیخوپورہ(بیورورپورٹ) لاہور روڈ پرٹول پلازہ کے قریب دوران ڈکیتی مزاحمت پر ڈاکوؤں کی فائرنگ سے زخمی ہونے والا شخص علی حمزہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے میو ہسپتال میں دم توڑ گیا۔مقتول کے لواحقین نے نعش لاہور روڈ پر رکھ کر اس واقعہ کے خلاف شدید احتجاج اور پولیس کے خلاف نعرے بازی کی، مظاہرین کا مطالبہ تھا کہ پولیس کی نااہلی کے باعث علاقہ میں ڈکیتی کی وارداتوں میں اضافہ ہوچکا ہے اور مقتول کے قاتل ڈاکوؤں کو فی الفور گرفتار کیا جائے، بتایا گیا ہے کہ 6روز قبل مقتول علی حمزہ اپنی فیملی کے ہمراہ موٹر سائیکل پر شاہدرہ سے شیخوپورہ آرہا تھا کہ دو ڈاکوؤں نے انہیں لوٹ لیا اور گن پوائنٹ پر ان سے طلائی زیورات، نقدی، موبائل فون چھیننے کے بعد جب ڈاکوؤں نے اسکی بیٹی کو اغواء کرنے کی کوشش کی تو مقتول علی حمزہ نے مزاحمت کی جس پر ڈاکوؤں نے اسکی بیوی اور بچوں کے سامنے فائرنگ کرکے شدید زخمی کردیا جو ہسپتا ل جاکر جانبر نہ ہوسکا، واضح رہے کہ جب ڈکیتی کے دوران مزاحمت پر مقتول علی حمزہ فائرنگ کا نشانہ بنا تو زخمی باپ کی جان بچانے کی خاطر اسکی معصوم بیٹی دہائیاں دیتی رہی جسے ریسکیو کرنے میں خاصا وقت لگا اور زیادہ خون بہہ جانے کے باعث اسکی حالت نہایت بگڑ گئی ورثاء کا موقف تھا کہ بروقت پولیس موقع پر پہنچ جاتی تو علی حمزہ کو فوری ریسکیو کیا جاسکتا تھا مگر شہریوں کی اطلاع کو پولیس کی طرف سے خاطر میں نہ لایا گیا جبکہ واردات کے روز ورثاء کے احتجاج پر پولیس کی طرف سے ملزمان کی تین روز میں گرفتاری عمل میں لانے کی یقین دہانی پر احتجاجی مظاہرہ ختم کردیا گیا مگر 6روز گزر جانے کے باوجود پولیس ملزمان گرفتار نہ کرسکی جبکہ زخمی علی حمزہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے میو ہسپتال میں گزشتہ روز دم توڑ گیا۔ 

نوجوان جاں بحق

مزید :

صفحہ آخر -