کراچی: ایک شخص کے قبضے سے بچے کی بوری بند لاش برآمد

    کراچی: ایک شخص کے قبضے سے بچے کی بوری بند لاش برآمد

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)کراچی کے علاقے نیو کراچی کی شفیق کالونی میں ایک شخص کے قبضے سے بچے کی بوری بند لاش برآمد ہوئی ہے،ڈاکٹر کا کہنا ہے کہ پوسٹ مارٹم کے دوران بچے سے بداخلاقی کے شواہد ملے ہیں تاہم حتمی فیصلہ کیمیکل ایگزامن کی رپورٹ آنے کے بعد کیا جائے گا،واقعے کا مقدمہ تھانہ فیڈرل بی انڈسٹریل ایریا میں درج کرلیا گیا ہے،مقدمے میں گرفتار ملزم سمیع اللہ کو نامزد کیا گیا ہے۔کراچی میں ایک اور معصوم بچہ جنسی درندگی کی بھینٹ چڑھ گیا۔ کراچی کے علاقے کے علاقے فیڈرل بی صنعتی ایریا کی شفیق کالونی کا رہائشی8سالہ حارث گزشتہ شب لاپتہ ہوا، اہل خانہ تلاش میں مصروف تھے۔رات گئے علاقہ مکینوں نے ایک شخص کو حارث کی لاش لے کر جاتے دیکھا تو اسے پکڑ کر پولیس کے حوالے کردیا، ملزم کی شناخت سمیع اللہ کے نام سے کی گئی جو حارث کا پڑوسی بھی رہ چکا ہے۔پولیس کے مطابق شفیق کالونی میں ماشااللہ بلڈنگ کے قریب سے8 سالہ بچے کی بوری بند لاش ملی، بچے کی شناخت حارث کے نام سے ہوئی ہے۔پولیس کے مطابق مشکوک شخص بوری لے کر جا رہا تھا کہ علاقہ مکینوں نے اسے روک کر چیک کیا، بوری سے بچے کی لاش نکلی تو ملزم کو پکڑ کر پولیس کے حوالے کر دیا گیا، ملزم بچے کا سابق پڑوسی ہے، 8 سالہ بچہ گزشتہ شام سے لاپتہ تھا۔پولیس کے مطابق 15 پر شفیق کالونی کے رہائشی سب انسپکٹر ذاکر نعیم نے اطلاع دی کہ ایک مشتبہ شخص کے قبضے سے بچے کی بوری میں بند لاش ملی ہے، مشتبہ شخص کو علاقہ مکینوں نے گھیرے میں لیا ہوا ہے۔پولیس نے موقع پر پہنچ کر ملزم کو تھانے منتقل کیا اور بچے کی لاش عباسی شہید اسپتال منتقل کر دی۔گرفتار ملزم کی شناخت سمیع اللہ کے نام سے ہوئی ہے جس سے تفتیش کی جا رہی ہے۔مقتول بچے حارث کے چچا وسیم نے بتایا کہ بچہ گزشتہ شام سے لاپتہ تھا، ملزم سمیع اللہ مقتول کا پڑوسی رہ چکا ہے، ملزم کی اس سے پہلے بھی شکایات آ چکی ہیں۔انہوں نے بتایا کہ ملزم نے پکڑے جانے پر کہا کہ بچہ مجھے ندی سے ملا ہے پھر ملزم نے بیان بدلہ اور کہا کہ بچہ فلیٹوں کے پاس سے ملاہے۔ملزم لاش پھینکنے جا رہا تھا تو علاقہ مکینوں نے تلاشی لی جس سے وہ پکڑا گیا۔بچے کی موت کا سبب جاننے کے لیے ڈی این اے اور کیمیکل ایگزامینیشن کے سیمپل لیبارٹری بھجوا دیئے گئے ہیں۔پولیس کے مطابق آٹھ سالہ حارث کا پوسٹ مارٹم مکمل کرلیا گیا ہے، ابتدائی پوسٹ مارٹم کے مطابق ممکنہ طور پر بچے کے ساتھ بداخلاقی کی گئی ہے تاہم تصدیق کیمیکل رپورٹ آنے کے بعد کی جائے گی،وجہ موت کی تصدیق بھی کیمیکل رپورٹ آنے کے بعد ہوگی۔پولیس کے مطابق بچے کے جسم پر تشدد کے نشانات نہیں ملے، پوسٹ مارٹم رپورٹ کو محفوظ کر لیا گیا ہے جبکہ واقعے کا مقدمہ تھانہ فیڈرل بی انڈسٹریل ایریا میں درج کرلیا گیا ہے،مقدمے میں گرفتار ملزم سمیع اللہ کو نامزد کیا گیا ہے،ابتدائی تفتیش کے مطابق ملزم ماضی میں بھی اس فعل میں ملوث رہا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -