ادویات کی قیمتوں میں اضافہ مریض دشمنی، علاج معالجہ کا حق چھین لیا، ماہرین 

ادویات کی قیمتوں میں اضافہ مریض دشمنی، علاج معالجہ کا حق چھین لیا، ماہرین 

  

 لاہور (جاوید اقبال) وفاقی حکومت کی طرف سے ادویات کی قیمتوں میں اضافے پر مختلف ڈاکٹرز، پیرامیڈیکل سٹاف،نرسز، ایپکا، سول سوسائٹی اور مریضوں کی تنظیموں نے شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے اضافہ مسترد کردیا ہے اور کہا ہے کہ حکومت نے ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کرکے غریب مریضوں سے علاج معالجے کا حق چھین لیا ہے۔پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن لاہور کے صدر پروفیسر اشرف نظامی نے کہا کہ ایسی حکومت کا کیا فائدہ جو غریب سے روٹی کا نوالہ اور میڈیسن خریدنے کی سکت تک چھین لے۔حکومت ہوش کے ناخن لے۔جب سے پی ٹی آئی حکومت آئی ہے علاج معالجہ 200 فیصد مہنگا ہوگیا۔ کبھی ادویات کی قیمتوں میں اضافہ تو کبھی ٹیسٹوں کی قیمتیں بڑھادی جاتی ہیں۔ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن پنجاب کے صدر ڈاکٹر سلمان حسیب پیٹرن ان چیف ڈاکٹر عاطف مجید چوہدری اور سروسز ہسپتال لاہور کے چیئرمین ڈاکٹر محمود الحسن شاہ نے کہا کہ ادویات کی قیمتوں میں اضافہ مریض دشمنی کے مترادف ہے ہم اس کو یکسرمسترد کرتے ہیں حکومت نے ادویات کی قیمتوں میں اضافہ واپس نہ لیا تو تحریک چلائی جا سکتی ہے۔ شرم کا مقام ہے کھانسی لے کر امراض قلب، شوگر، گنٹھیا، کینسر جیسے امراض کی ادویات کی قیمتیں بڑھا دی گئی ہیں۔ینگ کنسلٹنٹ ایسوسی ایشن آف پاکستان کے صدر ڈاکٹر حامد مختار بٹ چیئرمین ڈاکٹر اسفندیار اور سینئر نائب صدر ڈاکٹر ایوب عثمان نے کہا کہ قیمتیں بڑھانے کیلئے حکومت نے ڈرامے بازی کی اور ڈریپ نے فارماسوٹیکل کمپنیوں سے ساز باز کی۔پروٹیکشن کونسل آف پاکستان کے صدر جاوید دین چیئرمین حاجی غلام حسین منہاس نے کہا کہ حکومت نے ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کرکے غریبوں پربم مارا ہے حکومت مریضوں کو زندہ درگور کر رہی ہے۔ لیگل ایڈوائزر چوہدری نثار نے کہا کہ ہم مریضوں کے حقوق پر کسی کو ڈاکا ڈالنے کی اجازت نہیں دیں گے اس اضافہ کو مریضوں کی یہ تنظیم لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج کرے گی۔ ینگ نرسنگ ایسوسی ایشن کی صدر نصرت چیمہ سینئر نائب صدر عابدہ ناصر نے کہا کہ حکومت آئے روز ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کر رہی ہے جس کا مقصد یہ لگتا ہے کہ کوئی غریب نہیں چھوڑنا۔ کلرکس ایسوسی ایشن کے ڈویژنل صدر محمد یونس بھٹی نے کہا کہ ہم ادویات کی قیمتوں میں اضافہ یکسرمسترد کرتے ہیں اضافہ واپس نہ لیا گیا تو پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر دھرنا دیں گے۔ ینگ لائیرز فارما سیسٹ ایسوسی ایشن پاکستان کے صدر نور محمد مہر نے کہا کہ وفاقی حکومت نے 94 دواؤں کی قیمتوں میں 9 تا 262 فیصد تک اضافے کر کے مریض کو زندہ درگور کر دیا ہے۔ یہ فارماسیوٹیکل کمپنیوں ڈریپ اور ظفر مرزا جیسے لوگوں کے گٹھ جوڑ کی وجہ سے ہوا ہے اور کندھا چا لاک ڈراپ انتظامیہ نے وفاقی کابینہ کا استعمال کیا۔

طبی ماہرین

مزید :

صفحہ اول -