آ ہی گیا وہ مجھ کو لحد میں اُتارنے | حفیظ جالندھری |

آ ہی گیا وہ مجھ کو لحد میں اُتارنے | حفیظ جالندھری |
آ ہی گیا وہ مجھ کو لحد میں اُتارنے | حفیظ جالندھری |

  

آ ہی گیا وہ مجھ کو لحد میں اُتارنے

غفلت ذرا نہ کی مرے غفلت شعار نے

او بے نصیب! دن کے تصوّر سے خوش نہ ہو

چولا بدل لیا ہے غمِ انتظار نے

اب تک اسیرِ دامِ فریبِ حیات ہوں

مجھ کو بھلا دیا مرے پروردگار نے

نوحہ گروں کو بھی ہے گلا بیٹھنے کی فکر

جاتا ہوں آپ، اپنی اَجل کو پکارنے

دیکھا نہ کاروبارِ محبّت کبھی حفؔیظ

فرصت کا وقت ہی نہ دیا کاروبار نے

شاعر: حفیظ جالندھری

(شعری مجموعہ:نغمہ زار؛ سالِ اشاعت1957)

Aa   Hi   Gaya   Wo   Mujh   Ko   Lahad   Men   Utaarnay

Ghaflat   Zara    Na   Ki   Meray    Ghaflat   Shiaar    Nay

O   Be   Naseeb   Din    K    Tasawwar    Say   Khush   Na   Ho

Chola   Badal    Liya    Hay   Shab-e-Intezaar    Nay

Ab   Tak    Aseer-e-Daam -e-Faraib -e-Hayaat   Hun

Mujh   Ko    Bhula    Diya    Miray   Parwardgaar   Nay

Noha   Garon   Ko   Bhi   Hay   Gala   Baithnay   Ki   Fikr 

Jaata   Hun   Aap   Apni   Ajal   Ko   Pukaarnay

Dekha    Na    Karobaar -e-Muhabbat   Kabhi   HAFEEZ

Fursat   Ka   Waqt   Hi   Na   Diya    Kaarobaar   Nay

Poet: Hafeez    Jalandhari

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -