پی ایس ایل فرنچائزز کو چھٹا ایڈیشن منسوخ ہونے کا خدشہ ستانے لگا مگر کیوں؟ شائقین کرکٹ کیلئے تشویشناک خبر

پی ایس ایل فرنچائزز کو چھٹا ایڈیشن منسوخ ہونے کا خدشہ ستانے لگا مگر کیوں؟ ...
پی ایس ایل فرنچائزز کو چھٹا ایڈیشن منسوخ ہونے کا خدشہ ستانے لگا مگر کیوں؟ شائقین کرکٹ کیلئے تشویشناک خبر

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) فرنچائزز کو چھٹے ایڈیشن کی منسوخی کا خدشہ ستانے لگا ہے جبکہ دوسری جانب عدالت نے ان کی درخواست بھی سماعت کیلئے منظور کر لی ہے جس میں لیگ کے فنانشل ماڈل کو چیلنج کیا گیا ہے اور پی سی بی نے یہ معاملہ عدالت لے جانے پر حیرت کا اظہار بھی کیا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز ہونے والی سماعت میں فرنچائزز کے وکلاءنے موقف اختیار کیا کہ پی سی بی نے 4سو بلین کمائے لیکن فرنچائزز کے مسائل پر کوئی توجہ نہیں دی گئی، پی سی بی نے ایک اعلامیہ کے ذریعے انٹرنیشنل براڈکاسٹنگ کے رائٹس ختم کر دئیے جبکہ چیف ایگزیکٹیو فرنچائز کے لائسنس کے طریقہ کار کو تبدیل کرنا چاہتے ہیں۔ 

درخواست میں خدشہ ظاہر کیا گیا ہے کہ پی سی بی کے اس اقدام سے ٹیموں کو مالی نقصان ہو گا، یکطرفہ فیصلوں سے پی ایس ایل کا چھٹا سیزن منسوخ ہو سکتا ہے، یہ اقدام کرکٹ کے فروغ اور عوام کی تفریح میں رکاوٹ بن سکتا ہے۔ درخواست میں استدعا کی گئی کہ پی سی بی فرنچائزز کا موقف سن کر تحفظات دور کرے، اسے حکم دیا جائے کہ پی ایس ایل کے مالی ڈھانچے پر نظر ثانی کرے۔

قبل ازیں بورڈ کے وکیل تفضل رضوی نے درخواستوں کے قابل سماعت ہونے پر اعتراض اٹھاتے ہوئے کہا تھا کہ درخواست گزاروں کو عدالت کے بجائے پی سی بی حکام سے بات کرنا چاہیے۔ عدالت نے درخواستوں پر پی سی بی سمیت فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے بدھ کو جواب طلب کر لیا تاحکم ثانی درخواست گزاروں کیخلاف ممکنہ تادیبی کارروائی بھی روک دی گئی ہے۔ 

دوسری جانب پی سی بی کے اعلامیہ میں بتایا گیاکہ وکلاءفرنچائزز کی جانب سے دائر کی گئی پٹیشن پر جسٹس ساجد محمودسیٹھی کے روبرو پیش ہوئے، تفضل رضوی نے اعتراض اٹھاتے ہوئے معزز عدالت کو آگاہ کیا کہ پی سی بی نے رواں ہفتے 2 مختلف مواقع پر پی ایس ایل کی تمام فرنچائززکو نیک نیتی کے ساتھ فنانشل ماڈل پر شکایات کا ازالہ کرنے کیلئے بات چیت کی دعوت دی۔

معاہدے کے مطابق پی سی بی اور فرنچائزز کے درمیان کسی بھی معاملے کو حل کرنے کا موزوں فورم آربیٹریشن کا آغاز ہے، لہٰذا فرنچائزز کی جانب سے دائر کردہ یہ پٹیشن مسترد کی جانی چاہیے، معزز عدالت کی ہدایت کے مطابق پی سی بی اپنا تحریری بیان بدھ کو جمع کرائے گا۔

اعلامیہ میں مزید کہا گیاکہ پی سی بی اپنے پارٹنرز کے ساتھ مل کر کام کرنے کیلئے پرعزم ہے تاہم اس معاملے پر مایوسی اور حیرانی ہوئی کہ فنانشل ماڈل پر بات چیت کی پیشکش کے باوجود فرنچائزز نے معزز عدالت سے رجوع کرلیا، بورڈ کورٹ میں اٹھائے گئے تمام اعتراضات کو دور کرنے اور تمام فریقین کیلئے قابل عمل حل کا منتظر ہے۔

مزید :

کھیل -