23 ستمبر کو طلال چودھری نے عبداللہ گارڈن میں ڈکیتی کی کال کی لیکن کچھ دیر بعد عائشہ رجب علی نے کال کرکے کیا بتایا؟ نجی ٹی وی چینل نے پولیس کے حوالے سے بڑا دعویٰ کردیا

23 ستمبر کو طلال چودھری نے عبداللہ گارڈن میں ڈکیتی کی کال کی لیکن کچھ دیر بعد ...
 23 ستمبر کو طلال چودھری نے عبداللہ گارڈن میں ڈکیتی کی کال کی لیکن کچھ دیر بعد عائشہ رجب علی نے کال کرکے کیا بتایا؟ نجی ٹی وی چینل نے پولیس کے حوالے سے بڑا دعویٰ کردیا

  

لاہور، فیصل آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق وزیر مملکت برائے داخلہ چودھری طلال نجی ہسپتال مٰیں زیر علاج ہیں اور ان کو چوٹیں آئی ہیں، ان چوٹوں کی مختلف وجوہات سامنے آرہی ہیں ، کچھ لوگوں کا موقف ہے کہ لیگی خاتون رہنما کیساتھ افیئر کی وجہ سے  انہیں تشدد کا نشانہ بنایا گیا جبکہ طلال کے بھائی کا کہناتھاکہ کینال روڈ پر چار افراد نے رات کی تاریکی میں انہیں تشد د کا نشانہ بنایا  تاہم اب معاملہ مزید مشکوک ہوگیا ، مسلم لیگ کی خاتون رہنما کا گھر بھی کینال روڈ پر ہی موجود ہے اور 23 ستمبر کی رات کو طلال چودھری نے پولیس کو  بتایا کہ عبداللہ گارڈن میں ان کیساتھ ڈکیتی ہوئی اور کال کرکے مدد مانگی ، کچھ ہی دیر بعد خاتون رکن کی بھی پولیس کو کال آگئی اور لوکیشن کا بتاتے ہوئے موقف اپنایا کہ کچھ لوگ انہیں حراساں کررہے ہیں۔ 

جی این این کے مطابق عائشہ رجب علی کا گھر عبداللہ گارڈن میں ہے اور وہ کینال روڈ پر ہی واقع ہے ، خاتون کی رہائش گاہ بھی یہی ہے اور 23 ستمبر کو طلال چودھری نے کال کرکے ڈکیتی کی اطلاع دی اور مدد مانگی، کچھ دیر بعد لیگی رکن اسمبلی عائشہ رجب علی بلوچ کی جانب سے پولیس کو کی گئی ۔ جیونیوز کے واقعے کے وقت بنائی گئی ویڈیو بھی سامنے لے آیا جس میں پولیس اہلکار کو یہ کہتے سنا جاسکتا ہے کہ آپ دونوں نے کال کی ، اب دونوں کا نمبر بند ہے جس پر طلال چودھری کہتے ہیں کہ انہوں نے میر ا فون لے لیا، میری آخری لوکیشن یہاں کی ہے ، میری موویز بنائیں، ان کی ساری عورتوں کے ان سے نمبر لیں، میں یہیں کھڑا ہوں، جس کو مرضی بلائیں، انہوں نے تنظیم سازی کے لیے بلایا اور اس کے لیے تین فون کیے ، میری بازو ٹوٹ گئی ، ایس پی صاحب کو بلا لو۔

جب طلال چودھری کہتے ہیں کہ انہوں نے تنظیم سازی کے لیے بلایا تو ایک شخص کہتا ہے کہ ہیں؟ ہیں؟ اس پر طلال چودھری نے کہا کہ  جب فون ملے گا، پتہ چل جائے گا۔

جیو کی رپورٹ کے مطابق خاتون ایم این اے کے گھر کے باہر واقعہ پیش آیا، طلال چودھری کی کال کے بعد پولیس جائے وقوعہ  کی طرف جارہی تھی کہ پولیس کو خاتون رہنما کی طرف سے ایک اور کال کی گئی کہ نامعلوم افراد گھر میں گھس کر ہراساں اور زبردستی گھر میں گھسنے کی کوشش  کررہے ہیں۔ جب پولیس موقع پر پہنچیں تو ایک طرف  خاتون سیاستدان اور عزیز و اقارب، دوسری طرف طلال چودھری  زخمی حالت میں تھے ۔ویڈیو میں موقع پر پہنچنے والے پولیس اہلکار نے اپنے اعلیٰ حکام کو کال کی  اور بتایا کہ  طلال چودھری کیساتھ وقوعہ ہوگیا، ہائی لیول مسئلہ ہے، جناب کو یہاں آنا پڑے گا۔ 

جیونے پولیس حکام کے حوالے سے بتایا کہ ایس پی کا اس معاملے میں موقف معلوم نہیں ہوسکا تاہم پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ انہیں بتایا گیا کہ آپس میں صلح ہوگئی جس کے بعد پولیس واپس چلی گئی ، طلال چودھری کوزخمی حالت میں لاہور منتقل کیاگیا۔ 

مزید :

ڈیلی بائیٹس -