”اب فیس بک انتخابات پر اثر نہیں ہوسکتا“سوشل سائٹ کااوورسائٹ بورڈ متعارف کروانے کا اعلان لیکن میدان کس نے مارلیا؟

”اب فیس بک انتخابات پر اثر نہیں ہوسکتا“سوشل سائٹ کااوورسائٹ بورڈ متعارف ...
”اب فیس بک انتخابات پر اثر نہیں ہوسکتا“سوشل سائٹ کااوورسائٹ بورڈ متعارف کروانے کا اعلان لیکن میدان کس نے مارلیا؟
کیپشن:    سورس:   creative commons license

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) حال ہی میں فیس بک کی طرف سے ’اوورسائٹ بورڈ‘ متعارف کروانے کا اعلان کیا گیا تھا جس کے ذریعے یہ تعین کیا جانا تھا کہ کیا چیز اس سوشل میڈیا پلیٹ فارم پر پوسٹ کرنے کی اجازت ہے۔ اب فیس بک کے ناقدین نے اس کے جواب میں پہلے ہی اپنا ’اوورسائٹ بورڈ‘ متعارف کروا دیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق یہ متبادل اوورسائٹ بورڈ متعارف کروانے والوں میں برطانیہ کی ایک نان پرافٹ گروپ ’دی سٹیزنز‘ کا کلیدی کردار ہے، جس کی طرف سے اس بورڈ کا نام ’رئیل فیس بک اوورسائٹ بورڈ‘ رکھا گیا ہے، جس کا مقصد امریکی انتخابات سے قبل فیس بک کی پالیسیوں اور پریکٹسز کا تعین کرنا اور ان میں موجود سقم دور کرنا ہے۔ 

اس گروپ کی طرف سے متنبہ کیا گیا ہے کہ فیس بک پہلے سے ہی اقلیتی ووٹوں کو دبانے کے لیے استعمال ہو رہا ہے۔ اس کے مختلف ٹولز جھوٹا پراپیگنڈا کرنے اور نجی مسلح تنظیموں کو ووٹنگ سٹیشنز پر احتجاج کے لیے منتظم کرنے کے لیے استعمال ہو رہے ہیں۔ گروپ کی طرف سے کہا گیا ہے کہ ”سٹیزنز کے ماہرین کے پینل کی طرف سے کیے گئے فیصلوں کا فیس بک پابند نہیں ہے لیکن گروپ کو امید ہے کہ اس کے اس بورڈ سے فیس بک پبلک سکروٹنی کے تابع آ جائے گا اور اس کے بہت مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔ 2016ءمیں ہم سمجھ نہیں سکے تھے کہ کس طرح فیس بک صدارتی انتخابات پر اثرانداز ہونے کے لیے استعمال ہو رہا ہے تاہم اس بار ہم ایسا نہیں ہونے دیں گے۔ ایک غیرمنتخب فرد واحد فیس بک پر حکومت کرتا ہے اور وہ کسی کو بھی جواب دہ نہیں ہے۔ فیس بک کا اپنا بورڈ اعلان کردہ تاریخ تک لانچ کر بھی دیا جائے تو اسے کسی بھی فیصلے تک پہنچنے میں 90دن لگیں گے ، چنانچہ وہ امریکہ کے صدارتی انتخابات کے حوالے سے عملاً غیرمو¿ثر ثابت ہو گا۔ ہمارا بورڈ تیار ہے اور بروقت فیصلہ کر سکتا ہے۔ہم ایک اور الیکشن کو غلط نہیں ہونے دیں گے۔ ہمارا ماننا ہے کہ ’رئیل ٹائمز‘ احتساب ناگزیر ہے۔“

مزید :

بین الاقوامی -