مہنگائی کاطوفان، حکومت مافیا کولگام ڈالے،شہریوں کاردعمل

مہنگائی کاطوفان، حکومت مافیا کولگام ڈالے،شہریوں کاردعمل

  

 میلسی (نامہ نگار)مہنگائی کے باعث  لوگوں کے چولہے ٹھنڈے ہوگئے ان خیالات کا اظہار مہنگائی کے مسئلے پر مختلف شہریوں نے کیا۔ سابق صدر بار مہر ظفر اقبال ایڈوکیٹ نے کہا کہ کرپشن مہنگائی کی جڑ ہے موجود حکومت کافی حد تک اس کے خاتمے میں کامیاب ہوئی (بقیہ نمبر5صفحہ6پر)

ہے آئندہ کو ئی کرپٹ حکمران بننے کی جرات نہیں کر یگا۔ ذیشان بھاء ایڈوکیٹ نے کہا کہ ذخیر ہ اندوز مافیا موجودہ حکومت کو ناکام کر کے گھر بھیجنا چاہتی ہے اس لیے حکمران اس مسئلے کا حل ڈھونڈیں۔ مصنف و شاعر علی حسین جاوید نے کہا کہ مہنگائی عالمی مسئلہ ہے اور اس سے حکومتیں رخصت ہوتی ہیں بڑی مشکل سے ایک اچھی حکومت آء مگر مہنگائی کا داغ دھوئے بغیر چارہ کار نہیں۔حاجی عثمان چائے والا نے کہا کہ  یہ پاکستان کے غریبوں کا مسئلہ ہے مگر امیر طبقے کے لوگ اسمبلیوں میں بیٹھے ہیں جو توجہ کریں تو یہ مسئلہ حل ہو سکتا ہے۔ ڈاکٹر مرزا اطہر نے کہا کہ  مہنگائی کا ہوا بنایا جا رہا ہے اور جو نظام کو اتھل پتھل کر نا چاہتے ہیں وہ اپوزیشن والے اسمبلی میں آکر اس کا حل نکالیں۔ندیم شیخ نے کہا کہ  موجودہ بدترین مہنگائی کی وجہ سے لوگوں کو مسلم لیگ ن کا دور یا دآرہا ہے کونسلر غلام شبیر نے کہا کہ گزشتہ حکومتوں نے دس سال میں جو بو یا وزیر اعظم عمران خان نے 3 سالوں میں کاٹا۔فدا حسین نے کہا کہ میلسی میں انتظامی مجسٹریٹ اب درست سمت میں کام کر رہے ہیں جس سے مصنوعی مہنگائی کم ہونے کی امید کی جاسکتی ہے۔ خوشی محمد ساجد شاپ کیپر نے کہا کہ مہنگاء بڑے پیمانے اور اعلی سطح پر ہوتی ہے جس میں فیکٹریاں۔ملوں کے مالک اور بڑے ڈراء پورٹ والے شامل ہیں ہم صرف کرایا اورتھوڑا منافع لیتے ہیں۔ شیخ سجاد نے کہا کہ اراکین اسمبلی اور بیورو کریسی مل کر ہر ضلع میں کام کرتے تو یہ صورت حال سامنے نہ آتی اب بھی وقت گذرا نہیں۔

مہنگائی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -