گیس 270فیصد مہنگی کرنے کی تجویز،بل میں 550تا 9000سے زائد تک اضافہ ہوگا،حکومت معیشت کی الف ب سے عاری،عمران نیازی قوم کو مہنگائی سے مارنے کا گناہ کرنے کے بجائے گھر چلے جائیں:شہباز شریف

  گیس 270فیصد مہنگی کرنے کی تجویز،بل میں 550تا 9000سے زائد تک اضافہ ہوگا،حکومت ...

  

 کراچی (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) حکومت نے رواں سال یکم نومبر سے گھریلو صارفین کیلئے گیس 270 فیصد مہنگی کرنے کی تیاری کرلی ہے، جس کے تحت مختلف سلیبز کے گیس بلز میں ساڑھے پانچ سو روپے لیکر نو ہزار روپے سے زائد تک کا ا ضافہ ہوگا۔تفصیلات کے مطابق یکم نومبر سے گھریلو صارفین کیلئے گیس مہنگی ہوسکتی ہے جبکہ گیس ریٹ میں اضافے کا اطلاق یکم نومبر سے 28 فروری تک ہوسکتا ہے۔دستاویز میں بتایا گیا ہے کہ پہلے دو سلیب والے گھریلو صارفین کیلئے گیس مہنگی نہیں ہوگی، ماہانہ 0.5 اور ایک ہیکٹا میٹر کیوب استعمال پر ریٹ میں اضافہ نہیں ہوگا، ماہانہ 2 ہیکٹو میٹر کیوبک پر ریٹ 553 کے بجائے 683 جبکہ بل 3733 کی بجائے 4295 روپے کرنے کی تجویز ہے، ماہانہ 3 ہیکٹو میٹر کیوبک کا ریٹ 738 کی بجائے 1000 روپے کرنے کی تجویز ہے۔دستاویز کے مطابق ماہانہ 3 ہیکٹو میٹر کیوبک کا بل 8016 کی بجائے 10272 روپے کرنے کی تجویز ہے، ماہانہ 4 ہیکٹو میٹر کیوبک کا ریٹ 14400 کی بجائے 19495 روپے کرنے کی تجویز ہے، 4 ایچ ایم سے زائد پر ریٹ 1460 کی بجائے 2000 روپے، ماہانہ 4 ایچ ایم سے زائد پر بل 25494 کی بجائے 34622 روپے کرنے کی تجویز ہے۔خبررساں نیوز ایجنسی آن لائن کے مطابق وفاقی حکومت کی چار ماہ کیلئے گیس کی قیمت میں 35 فیصد تک اضافے کی تجویز ہے، گیس کی قیمتوں میں اضافہ کا مقصد پیک سیزن میں گیس کا استعمال کم کیا جاسکے۔ذرائع پٹرولیم ڈویژن کے مطابق اضافے کی یہ تجویز نومبر سے فرور ی تک چار ماہ کیلئے ہے،گیس کی قیمتوں میں اضافے کی تجویز گھریلو صارفین کیلئے ہے،پہلے دو سلیب کے صارفین کیلئے گیس کی قیمتوں کوئی اضافہ نہیں کیا جائیگا، جبکہ گیس استعمال کر نیوالے آخری چار سلیب کے صارفین کیلئے گیس کی قیمتوں میں 35فیصد تک اضافہ کرنے کی تجویز ہے۔ ذرائع پیٹرولیم ڈویژن کے مطابق یہ تجاویز کابینہ کی توانائی کمیٹی میں پیش کی گئی تھیں،تاہم اس پر ابھی کوئی فیصلہ نہیں ہوا، ذرائع کے مطابق گیس قیمت سے متعلق حتمی فیصلہ وفاقی کابینہ کریگی، ماہانہ پچاس مکعب میٹرکیوبک تک استعمال کرنیوالے گھریلو صار فین کیلئے پہلے سلیب کی قیمت 121روپے فی ایم ایم بی ٹی یو،دوسرے سلیب کی قیمت 300روپے فی ایم ایم بی ٹی یو برقرار رکھنے کی تجویز دی گئی ہے۔ ذرائع کے مطابق گھریلو صارفین جو دوسرا سلیب ماہانہ100مکعب میٹر تک استعمال کرتے ہیں کیلئے آخری چار سلیب ماہانہ 2سو سے چار سو ایم ایم بی ٹی یو سے زائد استعمال کرتے ہیں گیس کے آخری چار سلیب کی قیمت ماہانہ 553روپے سے 1460روپے فی ایم ایم بی ٹی یو تک ہے۔

گیس مہنگی

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، نیوز ایجنسیاں)پاکستان مسلم لیگ (ن)کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہبازشریف نے کہا ہے حکومت کو معیشت کی الف ب بھی معلوم نہیں،قوم کو مہنگا ئی سے مارنے کا گناہ کرنے کے بجائے عمران نیازی گھر چلے جائیں،عمران نیازی اپنی پے درپے حماقتوں سے ملک میں خانہ جنگی کرانے پر تلے ہیں،پہلے بھی کہاتھا کہ موجودہ حکومت معیشت کا نائن الیون کرچکی ہے، ہم نے جو کچھ کہا آج سچ ثابت ہو رہا ہے،ہم نے کہاتھا بجٹ کے بعد مہنگائی اور ٹیکسوں کا نیا سیلاب آئیگا، حکومت نے ہماری بات سچ ثابت کی،حکومت نے قوم سے ٹیکس فری بجٹ کا جھوٹ بولا تھا، عوام میں مزید مہنگائی برداشت کرنے کی ہمت اور سکت نہیں، ظلم در ظلم بند کیاجائے،آٹا،چینی، گھی، دوائی، بجلی و گیس سمیت ہر چیز مہنگائی کی حدیں توڑ چکی ہے، مہنگائی نے عوام کی کمر توڑ دی ہے، غریب کا جینا حرام ہوگیاہے، اسی ہفتے پہلے بجلی میں 5 سے35فیصد اضافہ کیاگیا، اب گیس کی قیمت میں 35 فیصداضافے کی تجویز ہے،جو عوام کیساتھ ظلم، زیادتی اور سنگین مذاق ہے،عمران نیازی کی نااہلی کا خمیازہ ملک کے عوام کب تک بھگتیں گے؟۔ہفتہ کو اپنے ایک بیان میں شہبازشریف نے گیس کی قیمتوں میں 35 فیصد اضافے کی اطلاعات کی شدید مذمت کرتے ہوئے فیصلہ واپس لینے کا مطالبہ کیا اور کہا گیس کی قیمتوں میں اضافہ بلاجواز اور حکو مت کی ایک اورسنگین حماقت ہے،پہلے ہی گیس، بجلی کی قیمتوں میں تاریخی اضافہ ہوچکا ہے،قیمتوں میں مزید اضافہ سے مسئلہ حل نہیں ہوگا، مسئلہ حکمرانوں کی نااہلی اور کرپشن ہے،گیس اور بجلی کی قیمتوں میں اضافہ مسئلے کا حل ہوتا تو بجلی کے بعد گیس کا گردشی قرض قوم کے گلے نہ پڑتا،بجلی اور گیس کی قیمتوں میں اضافے سے عوام کی زندگی مزید جہنم بن جائیگی،  انہوں نے کہا آئی ایم ایف کا بجٹ تھا، حکومت اس کی شرائط پوری کر رہی ہے۔مہنگائی جس رفتار سے کی جارہی ہے، ثبوت ہے حکومت کو معیشت کی الف ب بھی معلوم نہیں۔141 فیصد گیس کی قیمت حکومت پہلے ہی بڑھا چکی ہے،حکومت کا دعویٰ تھا قیمت بڑھانے سے گیس کمپنیوں کا خسارہ کم ہوگا،حقیقت یہ ہے قیمت بڑھانے کے باوجود گیس کمپنیاں جتنا خسا ر ہ آج کررہی ہیں، تاریخ میں پہلے کبھی نہیں ہوا،دو سال ہوچکے ہیں لیکن گیس کمپنیاں اپنا آڈٹ کراسکیں اور نہ ہی اپنے اکاونٹس عوام کے سامنے پیش کرسکی ہیں،عمران نیازی کی نااہلی سے گیس کمپنیاں تباہ ہوگئیں اور قیمتوں میں بھی ہوشربا اضافہ ہوچکا ہے،آج دنیا کی سب سے مہنگی ایل این جی پاکستان خرید رہا ہے، جنوبی ایشیامیں بجلی اور گیس بھی سب سے مہنگی پاکستان میں ہے،آج دنیا میں سب سے زیادہ مہنگائی پاکستان میں ہے اور سب سے کم آمدن بھی پاکستان میں ہے۔

شہباز شریف 

مزید :

صفحہ اول -