ناکہ لگائےاہلکاروں کی چیکنگ کے بہانے لڑکی سے فحش حرکات، زیادتی کی کوشش، لاہور پولیس کے دونوں اہلکار گرفتار

ناکہ لگائےاہلکاروں کی چیکنگ کے بہانے لڑکی سے فحش حرکات، زیادتی کی کوشش، ...
ناکہ لگائےاہلکاروں کی چیکنگ کے بہانے لڑکی سے فحش حرکات، زیادتی کی کوشش، لاہور پولیس کے دونوں اہلکار گرفتار

  

لاہور(ویب ڈیسک) ڈیفنس سی میں پولیس اہلکاروں نے سٹور پر کام کرنے والی لڑکی سے فحش حرکات کیں  اور زیادتی کی کوشش کی جبکہ گن پوائنٹ پر نقدی چھین لی ۔معاملہ منظرعام پرآنے کے بعد ڈیفنس( سی )پولیس نے دونوں اہلکاروں عرفان عارف اور عامرمقصودکو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا۔آئی جی پنجاب فیصل شاہکار نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او لاہور سے رپورٹ طلب کر لی ہے ۔

مقامی میڈیا نے بتایا کہ یہ واقعہ 19 ستمبر شام 7بجے پیش آیا،جب میاں چنو ں کی رہائشی لڑکی جو ڈی ایچ اے فیز ون میں ایک ڈیپارٹمنٹل سٹور پربیماروالد کے علاج کی غرض سےنوکری کرتی ہے، اسی سٹورپرکام کرنیوالا آصف موٹرسائیکل پرلڑکی کوگھرچھوڑنے جارہاتھاکہ رنگ روڈ سروس روڈ کے ساتھ کھمبا چوک فیز 8 کے پاس ناکہ لگائے لاہور پولیس کے اہلکاروں نے انہیں روکا اور دونوں کے درمیان رشتہ پوچھا، 

لڑکی نے بتایا کہ ہم دونوں ایک سٹورپرنوکری کرتے ہیں، کوئی ناجائز تعلق نہیں ۔ اہلکاروں نے آصف کو کہا کہ 10ہزار روپے دو یا 2گھنٹے کے لئے لڑکی کو ہمارے حوالے کرو،اہلکار عرفان عارف نے لڑکی کو ویرانے میں لے جاکر زیادتی کی کوشش بھی کی ، لڑکی کے شورمچانے پر دوسرے اہلکار نے لڑکے سے گن پوائنٹ پر 3ہزار روپے لے لئے اور انہیں وہاں سے فوری جانے کو کہہ دیا ۔ متاثرہ لڑکی بہت خوفزدہ ہوگئی لیکن کچھ دن بعد اس باہمت لڑکی نے پولیس کو درخواست دیدی۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -