آزاد امیدواروں کی رکنیت منسوخ کرکے پیپلزپارٹی ووٹ نہیں بڑھاسکتی، شہری

آزاد امیدواروں کی رکنیت منسوخ کرکے پیپلزپارٹی ووٹ نہیں بڑھاسکتی، شہری
آزاد امیدواروں کی رکنیت منسوخ کرکے پیپلزپارٹی ووٹ نہیں بڑھاسکتی، شہری

  

لاہور (بابر بھٹی/رانا جاوید/الیکشن سیل) آزاد امیدواروں کی رکنیت منسوخ کرنے کا نوٹس جاری کرنے سے پیپلزپارٹی اپنی گرتی ہوئی ساکھ اور ووٹ بنک بچانے کی کوشش کرہی ہے شہریوں نے ان خیالات کا اظہار روزنامہ ”پاکستان“ سے گفتگو کرتے ہوئے کیا تفصیلات کے مطابق شہریوں کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی کے امیدوار دوسری پارٹیوں میں شامل ہوچکے ہیں اور جوکوئی رہ گئے تھے ان کو پیپلزپارٹی کی قیادت نے ٹکٹ نہ دے کر اپنی پارٹی سے علیحدہ ہونے پر مجبور کردیا ہے اب جو امیدوار آزاد کھڑے ہورہے ہیں ان کی رکنیت کو منسوخ کرنے سے پیپلزپارٹی کو کوئی اثر نہیں ہوگا کیونکہ پیپلزپارٹی اب نام کی جماعت رہ گئی ہے اللہ رکھا کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی کا ووٹ بنک پہلے ہی متاثر ہوچکا ہے کیونکہ پیپلزپارٹی ختم ہوچکی ہے پہلے ہی تقریباً آدھے پیپلزپارٹی کے ورکرز دوسری جماعتوں میں شامل ہوچکے ہیں محمد حسین کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی کے جو امیدوار آزا دکھڑے ہورہے ہیں ان کی رکنیت منسوخ کرنے سے شاید وہ اپنے کا غذات واپس لے لیں اور واپس اپنی پارٹی میں شامل ہوجائیں اور اگلے الیکشن تک انتظار کریںپیپلزپارٹی کا اپنے کارکنان کی رکنیت منسوخ کرنے کا اعلان پارٹی کیلئے بہتر ثابت ہوسکتا ہے محمد رفیق کا کہنا تھا کہ امیدواروں کی رکنیت منسوخ کرنے سے پیپلزپارٹی کو فائدہ تو نہیں ہوگا لیکن نقصان ضرور ہوگا کیونکہ جو امیدوار آزاد کھڑے ہورہے ہیں ان کی رکنیت اگر منسوخ کردیتے ہیں تو وہ تو پھر اور بہتر طریقے سے اپنی مہم چلاسکیں گے اور ان سے پارٹی کا جو پریشر ہوگا وہ ختم ہوجائے گا محمد عاشق کا کہنا تھا کہ بلاول بھٹو نے بہت اچھا فیصلہ کیا ہے کیونکہ اگر دیکھا جائے تو اپنی پارٹی کی قیادت کا کہنا نہیں مان سکتے یا ان کے کئے گئے فیصلوں کو قبول نہیں کرتے تو ان کو پارٹی میں رہنے کا کوئی حق نہیں۔

مزید :

الیکشن ۲۰۱۳ -