وزیراعظم نے بھی عوامی رابطہ مہم شروع کر دی

وزیراعظم نے بھی عوامی رابطہ مہم شروع کر دی

اسلام آباد سے ملک الیاس

ملک بھر کی طرح وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں بھی سیاسی موسم ان دنوں گرم ہے پانامہ لیکس کا بخار سرچڑھ کر بول رہا ہے ہرطرف سے ایک دوسرے پر الزامات کے تیر برسائے جارہے ہیں،ایک جانب اپوزیشن جماعتیں حکومت کیخلاف صف بندی کرنے میں مصروف ہیں تو دوسری طرف حکومتی وزراء اپوزیشن رہنماؤں کے الزامات کا منہ توڑ جواب دینے کیلئے اپنی سی کوششیں کررہے ہیں، تحریک انصاف نے ایف نائن پارک میں پارٹی کا یوم تاسیس منایا خوب ہلا گلا ہوا چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے بھی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیا لیکن پی ٹی آئی کے جو کارکن رائیونڈ کی جانب مارچ کے اعلان کی امید لیکر آئے تھے انہیں مایوسی ہوئی عمران خان نے رائیونڈ کیطرف جانے کی دھمکی ضرور دی مگر کوئی تاریخ نہ دی،ایف نائن پارک میں مجمع تو خوب لگا مگر ہلڑ بازی کے دوران خواتین سے ہونیوالی بدتمیزی اور چھیڑ چھاڑجیسے افسوسناک واقعات بھی ہوئے جن کو نہ صرف میڈیا نے دکھایا بلکہ عمران خان بھی اپنی تقریر کے دوران باربار خواتین کااحترام کرنے کی بات کرتے رہے۔

تحریک انصاف کے جلسے کے بعد پانامہ لیکس کی تحقیقات کے حوالے سے پیپلز پارٹی کے سیاسی جماعتوں سے رابطوں میں تیزی آگئی ہے،پیپلز پارٹی کے قائدین نے تحریک انصاف،مسلم لیگ ق اور ایم کیو ایم کے رہنماؤں سے ملاقاتیں کی ہیں، پاناما لیکس تنازع پر تحریک انصاف کے رہنما شاہ محمود قریشی اور اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کے درمیان ملاقات ہوئی، خورشید شاہ کاکہنا تھا کہ اخلاقی طور پر نواز شریف انتہائی کمزور پوزیشن پر ہیں اور سمجھ نہیں آ رہی کہ وہ جلسے پی ٹی آئی کے خلاف کریں گے یا اپنے خلاف ،جوڈیشل کمیشن کیلئے حکومتی ٹی او آرز تسلیم نہیں 47 سے احتساب شروع ہوا تو 100 سال میں مکمل ہو گا۔ جوڈیشل کمیشن کیلئے حکومتی خط بے مقصد ہے اور اپوزیشن کی تمام جماعتوں نے اسے مسترد کر دیاہے ، 2 مئی کو اپوزیشن کا مشترکہ لائحہ عمل تیار کریں گے، شاہ محمود قریشی کا کہنا تھاکہ اگر حکومت بااختیار کمیشن بنانا چاہتی ہے تو اپوزیشن سے مشاورت کرنی چاہئیے۔ پیپلز پارٹی اور ہمارے موقف میں یکسانیت ہے حکومتی لوگ تفریق پیدا کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ پاناما لیکس پر ہماری جدوجہد ایک ہے اور بلاول سے ڈائریکٹ نہیں کسی دوست کے ذریعے میرے جذبات ان تک پہنچ گئے ہیں، آئندہ میٹنگ میں ٹی او آرز کو مسترد کرنے والی جماعتیں مل بیٹھ کر فیصلہ کریں گی۔ مسلم لیگ ق کی قیادت سے پیپلز پارٹی کے رہنماؤں نے ملاقات کی، ملاقات میں چودھری شجاعت حسین، چودھری پرویزالٰہی، سید خورشید شاہ، چودھری اعتزاز احسن، سینیٹر مشاہد حسین سید، سینیٹر سعید مندوخیل، اکرم ذکی، سینیٹر سعید غنی، سید نوید قمر ودیگر رہنما شریک تھے،مسلم لیگ ق کی قیادت نے اس مسئلہ پر پیپلز پارٹی کا ساتھ دینے کااعلان کیا،دونوں پارٹیوں کے رہنماؤں نے اتفاق سے ٹی او ٓرز کو مسترد کردیا، پانامہ لیکس پر جوڈیشل کمیشن کے ٹرمز آف ریفرنس حکومت اور اپوزیشن کو مل کر بنانے چاہئیں،قوم جاننا چاہتی ہے کہ اتنی بھاری رقوم باہر کیسے گئیں ،دوسری طرف پانامہ لیکس کے معاملے پر ایم کیو ایم نے بھی پیپلزپارٹی سے مشروط تعاون کا فیصلہ کیا ہے،قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ اور سینیٹ میں قائد حزب اختلاف چوہدری اعتزاز احسن نے ایم کیو ایم کے وفد سے ملاقات کی،ایم کیو ایم کی جانب سے قومی اسمبلی میں پارلیمانی لیڈر ڈاکٹر فاروق ستار سمیت سلمان مجاہد بلوچ اور شیخ صلاح الدین موجود تھے، ڈاکٹر فاروق نے کہا کہ وزیراعظم کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپوزیشن کے فرانزک آڈٹ کے مطالبے کو مانتے ہوئے قومی مشاورت کے ساتھ اس بحران سے نجات حاصل کریں اگر اس معاملے کو سنجیدگی سے نہ لیا گیا تو ملک کا استحکام اور مستقبل داؤ پر لگ جائے گا اور بے یقینی کی صورتحال بڑھ جائے گی اور جمہوریت کو نقصان ہوگا،پانامالیکس معاملے پر ہم ایک پیج پر موجود ہیں،پاناماانکشافات اپوزیشن جماعتوں نے نہیں کئے بلکہ سرحد پار سے ہوئے ہیں، عالمی فرانزک آڈٹ فرم کے بغیر احتساب ممکن نہیں ہے

پی ٹی آئی کے جلسوں کا جواب دینے کیلئے وزیراعظم محمدنوازشریف بھی عوامی رابطہ مہم پر نکل کھڑے ہوئے ہیں انہوں نے کوٹلی ستیاں میں عوام سے خطاب کرتے ہوئے اپنی حکومت کی کارکردگی عوام کے سامنے رکھی انکا کہنا تھا کہ ہماری سیاست ترقی و خوشحالی کی سیاست ہے ،دھرنے، جھوٹ اور تباہی کی سیاست پر یقین نہیں رکھتے،حکومت نے پاکستان کی ایک ایک پائی کو امانت سمجھ کر خرچ کیا ، کراچی میں امن قائم ہوچکا ہے اور کاروبار زندگی ایک مرتبہ پھر رواں دواں ہے،غربت کے خاتمے کے لئے دہشت گردی کا خاتمہ ضروری ہے، ہماری بہادر فوج دہشت گردوں کے خلاف آپریشن میں مصروف عمل ہے،3 سال قبل ملک بھر میں لوڈشیڈنگ کے خلاف مظاہرے ہوتے تھے لیکن اب اس میں کمی آئی ہے، موجودہ حکومت نے بجلی کے تین منصوبوں میں ملکی خزانے کے 100 ارب روپے بچائے،عوام جتنی مجھ سے محبت کرتے ہیں میں ان سے بڑھ کر محبت کرتا ہوں، میری خواہش ہے کہ پاکستان کے چپے چپے میں ہسپتال ہوں،کوٹلی ستیاں کے ایک ایک گھر میں بجلی و گیس فراہم کی جائے گی،یہ وعدے آئندہ انتخابات سے پہلے پورے کریں گے ،کوٹلی ستیاں کو موٹروے کے ذریعے جہلم، میرپور اور آزاد کشمیر سے ملایا جائے گا، مظفر آباد موٹروے کا سروے جاری کر دیا گیا، جس پر بھاری رقم خرچ ہو گی۔

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات پرویز رشید،وفاقی وزیر برائے ریلوے خواجہ سعد رفیق،وفاقی وزیر دفاع خواجہ آصف سمیت حکومتی ممبران اسمبلی اپوزیشن کے الزامات اور تنقید کا فوری جواب دیکر حساب برابر کررہے ہیں،پرویز رشید کا کہنا ہے کہ جو لوگ کمیشن سے انکار کررہے ہیں ان کا دامن صاف نہیں ،ہمارا دامن صاف ہے اسلئے جوڈیشل کمیشن کے قیام کیلئے خط لکھ دیا ہے‘ جب کوئی اس طرح کے الفاظ استعمال کرتا ہے کہ میں آپ کو گریبان سے پکڑ کر وزیراعظم ہاؤس سے باہر پھینکوں گاتو اس میں اور دہشتگردوں میں کیا فرق رہتا ہے‘ کرسی حاصل کرنے کیلئے انتہا پسندی کے جراثیم سیاست میں بھی آگئے ہیں، اگر کسی کو سیاسی اختلافات ہیں تو وہ پارلیمنٹ کے فلور پر آئیں،خواجہ سعد رفیق کا کہنا تھا کہ احتساب سب کا ہوگا ،ایسا نہیں ہے کہ کسی ایک خاندان کو ٹارگٹ بنا لیاجائے اور باقی سب کو چھوڑدیا جائے اگر کسی کو طریقہ کار پر اعتراض ہے تو وہ دھرنے دینے کی بجائے پارلیمنٹ میں آکر اپنا موقف پیش کرے،کس نے چوری کی اور کس نے نہیں کی۔ جب تحقیقات ہوں گی تو سب کچھ سامنے آ جائے گا۔خواجہ آصف کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ شوکت خانم ایک فلاحی ادارہ ہے اور یہ ہمیں بھی اسی طرح عزیز ہے جس طرح عمران خان کو عزیز ہے ۔عمران خان شوکت خانم کے پیچھے چھپ کر خود کو بچانا چاہ رہے ہیں عمران خان شوکت خانم کے ہسپتال کے ڈائریکٹرزکو فائدہ نہ پہنچائیں ۔

مزید : ایڈیشن 1

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...