ایمنسٹی سکیم کی ناکامی صنعتکاروں ، تاجر و سرمایہ کاروں کا حکومت پر عدم اعتماد ہے ، کامران سیف

ایمنسٹی سکیم کی ناکامی صنعتکاروں ، تاجر و سرمایہ کاروں کا حکومت پر عدم ...

لاہور جنرل رپورٹر)پاکستان مسلم لیگ ق کے راہنما و سابق جوائینٹ سیکرٹری پاکستان مسلم لیگ لاہور میاں کامران سیف نے کہا ہے کہ ٹیکس ایمنسٹی سکیم کی ناکامی صنعتکاروں ، تاجر و سرمایہ کاروں کا حکومت پر عدم اعتماد ہے سرمایہ کاروں کی اکثریت نے اس سکیم پر تحفظات کا اظہار کیا ہے جبکہ چند سرمایہ کاروں کی جانب سے کالا دھن سفید کرنا انتہائی تشویشناک ہے کیونکہ یہ رقم ٹیکس چوری و دیگرغیر قانونی ذرائع سے حاصل کی جاتی رہی ہے انہوں نے کہا کہ ن لیگ بطور اپوزیشن ماضی میں ٹیکس ایمنسٹی سکیم کے خلاف رہی لیکن اقتدار میں آتے ہی لوٹی ہوئی دولت اور کالا دھن کو سفید ،جائز بنانے کیلئے سکیم بنا ڈالی جو ایماندار لوگوں سے زیادتی ہے جو پورا ٹیکس ادا کرکے کاروبار کررہے ہیں اور حکومت ان پر مزید ٹیکسوں کا بوجھ ڈال کر انہیں غیر قانونی کاموں پر مجبور کررہی ہے۔میاں کامران سیف نے کہا کہ لوٹی ہوئی دولت کو جائز بنانے کی کسی بھی معاشرے میں اجازت نہیں دی جاسکتی ۔اس لیے حکومت ٹیکس ایمنسٹی سکیم کے خاتمہ کا اعلان کرے کیونکہ صرف گنتی کے چند لوگوں نے اس سکیم سے فائدہ اٹھایا زیادہ تر لوگ اس کے خلاف رہے اور اس سکیم میں آنے سے ہچکچاہٹ کا مظاہرہ کررہے ہیں۔عام تاجر کی سکیم سے بیزاری سے یہ سکیم یکسر ناکام ہوچکی ہے انہوں نے کہا کہ پانامہ لیکس نے عالمی سطح پر طوفان برپا کیا ہوا ہے یہ دراصل لوٹی ہوئی دولت ہی ہے جو بیرون ملک کاروبار میں استعمال ہورہی ہے اگر یہ دولت اپنے ملکوں میں لائی جائے تو حکومت کو قرضوں کی ضرورت ہی نہ رہے گی اور اپنے ملک کے اندر کام کرنے سے حکومت کو ٹیکس کی مد میں بھی بے پناہ آمدنی حاصل ہوگی ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1