جامع قادسیہ میں شرعی عدالت کے قیام کیخلاف درخواست کے قابل سماعت ہونے پر فیصلہ محفوظ

جامع قادسیہ میں شرعی عدالت کے قیام کیخلاف درخواست کے قابل سماعت ہونے پر ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائی کورٹ نے جامع قادسیہ میں شرعی عدالت کے قیام کے خلاف درخواست کے قابل سماعت ہونے پر فیصلہ محفوظ کر لیا ۔جسٹس شاہد بلال حسن نے شہری خالد سعید کی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزار نے موقف اختیار کیا ہے کہ وہ گزشتہ 20سال سے علاقے میں رہائش پذیر ہیں، اس دوران اس کوعلم ہوا کہ جامع قادسیہ میں شرعی عدالت قائم کی گئی ہے، شرعی عدالت کا قیام خلاف قانون ہے، درخواست گزار نے استدعا کی کہ شرعی عدالت کو کام کرنے سے روکا جائے اور متوازی عدالت کے قیام کے ذمہ داران کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے، ڈپٹی اٹارنی جنرل اور اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے درخواست مسترد قرار دینے کی استدعا کی، ڈپٹی اٹارنی جنرل نے کہا کہ جامع قادسیہ میں شرعی عدالت کے قیام کے خلاف براہ راست ہائی کورٹ سے رجوع نہیں کیا جاسکتا، اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے کہا کہ درخواست گزار کو پولیس میں رپورٹ کرنی چاہیئے تھی،فریقین کے دلائل سننے کے بعد عدالت نے جامع قادسیہ میں شرعی عدالت کے قیام کے خلاف درخواست کے قابل سماعت ہونے پر فیصلہ محفوظ کر لیاہے۔

 

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...