گورنر پنجاب سے برطانیہ کے ہائی کمشنر اور وکلاء کے وفد کی ملاقات

گورنر پنجاب سے برطانیہ کے ہائی کمشنر اور وکلاء کے وفد کی ملاقات

لاہور( نمائندہ خصوصی) گورنر پنجاب ملک محمد رفیق رجوانہ نے کہا ہے کہ عوام کے معیارزندگی میں بہتری لانا اور جمہوری ثمرات کو ملک کے طول و ارض تک پہنچانا حکومت کی اولین ترجیح ہے اور جتنے بڑے ترقیاتی منصوبے اس دور میں شروع ہوئے ہیں اس کی ماضی میں کوئی مثال نہیں ملتی ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں معاشی ترقی کو تیز کرنے میں برطانیہ ایک بڑا شراکت دار ہے اور یہ امر خوش آئند ہے کہ پاکستان اور برطانیہ کے درمیان دوطرفہ تعاون میں مسلسل تیزی آ رہی ہے ۔ان خیالات کا اظہار انہو ں نے برطانیہ کے ہائی کمشنر تھامس ڈریوسے ملاقات کے دوران کیا جنہو ں نے گورنر ہاؤس لاہور میں ان سے ملاقات کی ۔گورنر پنجاب نے کہا کہ تعلیم کے شعبے میں برطانیہ کا تعاون قابل تعریف ہے اور ہزاروں طلباء و طالبات برطانیہ میں اعلی تعلیم حاصل کر رہے ہیں تاہم برطانیہ کو اپنی یونیورسٹیز میں داخلے کے عمل کو آسان اور تیز کرنا چاہیے تاکہ وہاں تعلیم حاصل کرنے کے زیادہ سے زیادہ خواہشمند طالب علم استفادہ کر سکیں ۔گورنر پنجاب نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کامیابی سے عالمی سرمایہ کاروں کا پاکستان پر اعتماد بڑھ رہا ہے اور برطانیہ سمیت پوری دنیا سے تاجر اور سرمایہ کار پاکستان کا رُخ کر رہے ہیں ۔برطانیہ کے ہائی کمشنر نے کہا کہ ان کے ملک کو پاکستان کے ساتھ اپنے تعلقات پر ناز ہے اور دونوں ملکو ں کے درمیان باہمی تعاون نئی بلندیوں کو چُھو رہا ہے۔بعد ازاں،ء مسلم لیگ (ن )لائرز ونگ فیصل آباد کے20 رکنی وفدجس کی قیادت فرحت الطاف کر رہے تھے گفت گو کرتے ہوئے گورنر پنجاب ملک محمد رفیق رجوانہ نے کہا کہ وزیر اعظم محمد نواز شریف کی طرف سے پانامہ لیکس کے معاملے پر کمیشن بنانے اور خو د کو احتساب کے لیے پیش کرنے کا فیصلہ ان کی جمہوری سوچ کا آئینہ دار ہے اور اب اپوزیشن کو بھی اس پر سیاست چمکانے کی بجائے کمیشن کی تحقیقات کا انتظار کرنا چاہیے ۔انہو ں نے کہا کہ ارض پاک کی ترقی اور عوام کی خوشحالی موجودہ سیاسی قیادت کا عزم ہے یہی وجہ ہے کہ جھوٹے سیاسی الزامات کی تیز رفتار آندھی کے باوجود فلاح کی جانب اُٹھنے والے حکومت کے قدم نہ تو ڈگمگائے ہیں اور نہ ہی رکے ہیں ۔ گورنر پنجاب نے کہا کہ وکلاء معاشرے کا تعلیم یافتہ طبقہ ہے جنہیں اپنی پیشہ ورانہ خدمات احسن طریقے سے اداکرنے کے ساتھ ساتھ ملک میں اعلی معاشرتی اقدار کو پروان چڑھانے کے لیے آگے بڑھنا ہو گا۔گورنر پنجاب نے کہاکہ وکلاء برادری کی پیشہ وار انہ استعداد کار میں اضافہ اور ان کے مسائل کا حل ہماری اولین ترجیح ہے اور وہ اس سلسلے میں اپنا بھرپور کردار ادا کر تے رہیں گے۔انہو ں نے کہا کہ صوبے کے اعلی آئینی عہدے پر ایک وکیل کا انتخاب درحقیقت وکلا کی اہمیت کا مظہر ہے ۔وکلاء کے وفد نے کہا کہ وہ گورنر پنجاب کو وکلاء برادری کا نمائندہ سمجھتے ہیں ۔دریں اثناہء گورنر پنجاب نے ملتان میں بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی کی بس تلے ایک لڑکے کی ہلاکت کا نوٹس لیتے ہوئے متعلقہ حکام کو فوراً رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے ۔

مزید : صفحہ آخر