سرویلنس کیمروں سے مجرموں کی درست نشاندہی ممکن ہے :گورنر سندھ

سرویلنس کیمروں سے مجرموں کی درست نشاندہی ممکن ہے :گورنر سندھ

کراچی (اسٹاف رپورٹر)گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد خان نے کہا ہے کہ شہر میں امن و امان کی صورتحال میں بہتری کا ایک بڑا سبب مختلف شاہراہوں اور علاقوں میں سر ویلنس کیمروں کی موجودگی بھی ہے جن کے باعث مجرموں کی درست نشاندہی ممکن ہو سکی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے شہر میں سر ویلنس کیمروں کی کار کردگی کے بارے میں منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اجلاس میں ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل پاکستان رینجرز سندھ بریگیڈیئر اظہر ، کمشنر کراچی آصف حیدر شاہ ، ایڈمنسٹریٹر کراچی لئیق احمد ،سی پی ایل سی (CPLC) چیف زبیر حبیب، محکمہ داخلہ ،پولیس اور بلدیہ عظمیٰ کراچی کے اعلیٰ حکام نے شرکت کی ۔ گورنر سندھ نے کہا کہ سر ویلنس کیمروں کی مانیٹرنگ کے لئے کمانڈ اینڈ کنٹرول سینٹر کی کارکردگی نہایت اہم ہے کیونکہ اس کے ذریعہ ان کیمروں کو 24 گھنٹے مانیٹر کیا جاتا ہے تاکہ کسی بھی نا خو شگوار واقعہ یا جرم میں ملوث افراد کا فوری طور پر پتہ لگا کر انھیں انصاف کے کٹہرے میں لایا جاسکے اور متاثرہ فرد یا افراد کو انصاف مل سکے ۔ گورنر سندھ نے ہدایت کی کہ خراب اور ٹھیک طور پر کام نہ کرنے والے سر ویلنس کیمروں کو فوری طور پر درست کیا جائے اس کے علاوہ جن علاقوں اور اہم شاہراہوں پر سر ویلنس کیمرے موجود نہیں ہیں ان کا جائزہ لے کر جلد از جلد وہاں سرویلنس کیمرے نصب کئے جائیں ۔گورنر سندھ نے مزید کہا کہ پولیس ،بلدیہ عظمیٰ کراچی اور آئی ٹی ڈپارٹمنٹ ،تینوں کے کیمروں کو مزید بہتر بنانے کے لئے کام کیا جائے اور ان پروجیکٹ پر کام کرنے والے کنٹریکٹر ز کے بقایا جات کی ادائیگی کیلئے بھی اقدامات کئے جائیں تاکہ ان کیمروں کے مسلسل کام کرنے کو یقینی بنایا جاسکے ۔ انہوں نے کہاکہ اسٹریٹ کرائمز ، حادثات ، ایمر جنسی کی نشاندہی اور اس صورتحال میں ریسکیو کے ضمن میں ان کیمروں کا کردار نہایت اہم ہے اس لئے ان کیمروں کو جدید بنانے کے لئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات کئے جائیں ۔گورنر سندھ کو اس موقع پر بتایا گیا کہ بلدیہ عظمیٰ کے پروجیکٹ کے تحت شہر کے مختلف مقامات پر 1292 کیمرے لگائے گئے تھے جن میں سے 1240 کام کررہے ہیں جبکہ پولیس کے تحت 164 مقامات پر 820 کیمرے لگائے گئے تھے جن کی اکثریت مختلف وجو ہات کے باعث کام نہیں کررہی ۔ گورنر سندھ کو بتایا گیا کہ بلدیہ عظمیٰ اور آئی ٹی ڈپارٹمنٹ کے کیمروں کا کنٹرول بھی اب سندھ پولیس کے پاس ہے اور وہ ان کی دیکھ بھال کا کام بھی انجام دے رہی ہے۔

مزید : کراچی صفحہ اول