چارسدہ ،خاتون کی درخواست پر ایس ایچ او کی گرفتاری کی تعمیل نہ ہوسکی

چارسدہ ،خاتون کی درخواست پر ایس ایچ او کی گرفتاری کی تعمیل نہ ہوسکی

شبقدر (نمائندہ خصوصی )چارسدہ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن عدالت میں ڈسٹرکٹ سیشن جج نے خاتون کا ایس ایچ او تھانہ شبقدر کے خلاف درخواست کے سماعت کے دوران ایس ایچ او کو گرفتار ی کو گرفتار کرنے کا حکم دیا ۔جس پر ایس ایچ او نے گرفتاری دینے سے انکار کرتے ہوئے احاطہ عدالت سے باہر نکل گئے ۔ ایس ایچ او کی گرفتاری نہ دینے اور سیشن جج سے تکرار کے خلاف عدالتوں میں ججز نے مقدمات کی سماعت کا بائیکاٹ کر دیا ۔چارسدہ کے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ میں ایک خاتون کے درخواست پر ڈسٹرکٹ انڈ سیشن جج نے دوران سماعت ایس ایچ او تھانہ شبقدر مرتضی خان کو گرفتار کر نے کا حکم دیا ۔جس پر ایس ایچ او تھانہ شبقدر نے گرفتاری دینے سے صاف انکار کرتے ہوئے احاطہ عدالت سے باہر نکل ائیں ۔ایس ایچ او تھانہ شبقدر اور ڈسٹرکٹ سیشن جج کے درمیان تکرار اور گرفتاری نہ دینے کے خلاف دیگر ججز نے احتجاجا عدالتوں میں مقدمات سے بائیکاٹ کر دیا ۔اور ڈسٹرکٹ سیشن جج نے دیگر ججز کا اجلاس بلاکر معاملے پر مشاورت شروع کر دی ہیں ۔دریں اثناہ ایس ایچ او تھانہ شبقدر مرتضی خان نے کہا کہ خاتون نے ان کے خلاف 22-Aکی درخواست دی ہیں ۔جس کی آج سماعت تھی ۔دوران سماعت معزز جج نے ان کیے خلاف غیر قانونی طور پر گرفتاری کا حکم صادر فرمایا کیوں مذکور مقدمے میں خاتون کے درخواست پر مقدمہ درج ہو چکا ہے اور ملزمان گرفتار ہوکر عدالت میں بھی پیش ہو چکے ہیں ۔انہوں نے مزید بتایا کہ ملزمان ایڈیشنل سیشن جج شبقدر کی عدالت سے ضما نت پر رہا ہو چکے ہیں ۔سیشن جج نے تکرار پر ان کے خلاف حکم صادر فرمایا انہوں نے کہا کہ ان کے خلاف تاحال نہ کوئی مقدمہ درج ہے اور نہ ہی انہوں نے کوئی جرم کیا ہے ۔اس لئے انہوں نے گرفتاری نہیں دی ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...