بوٹینیکل گارڈن اضاخیل کو تالے لگانے پر ضلعی انتظامیہ کیخلاف رٹ

بوٹینیکل گارڈن اضاخیل کو تالے لگانے پر ضلعی انتظامیہ کیخلاف رٹ

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ کے واضح احکامات کے باوجود بوٹینکل گارڈن اضاخیل کوتالے لگانے پر ضلعی انتظامیہ نوشہرہ کے خلاف توہین عدالت کی درخواست دائر کردی گئی ہے پشاوریونیورسٹی بذریعہ وائس چانسلراورسنڈیکیٹ بذریعہ رجسٹرار وسیم الدین خٹک ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائرکی جانے والے توہین عدالت کی درخواست میں ڈپٹی کمشنرنوشہرہ افتخارعالم کوفریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیاگیاہے کہ پشاورہائی کورٹ نے 20اپریل2016ء کو ضلعی انتظامیہ نوشہرہ کی جانب سے بوٹینکل گارڈن اضاخیل کالیزمنسوخ کرنے کے فیصلے کو معطل کرتے ہوئے حکم ا متناعی جاری کیاتھا تاہم اگلے روز ڈی سی نوشہرہ نے بھاری پولیس نفری کے ہمراہ بوٹینکل گارڈن پرغیرقانونی چھاپہ مار ا اورگارڈن کو زبردستی تالے لگادئیے جبکہ اس اقدام پر بوٹینکل گارڈن کے طلبہ مین جی ٹی روڈ پر کلاسیں لینے پرمجبورہوئے جبکہ دوسری جانب بوٹینکل گارڈن میں نہ صرف نایاب پودے ہیں بلکہ وہاں نایاب اقسام کی مچھلیاں رکھی گئی ہیں جن کاروزانہ کی بنیاد پر خیال رکھاجاتاہے اورکروڑوں روپوں کی نایاب اشیاء ہیں اوراگرتالے نہ کھولے گئے تو اس کاضیاع ہوسکتاہے جبکہ طلباء کاقیمتی وقت بھی ضائع ہورہا ہے اورضلعی انتظامیہ نوشہرہ کے اس اقدام سے ملک کی ساکھ متاثرہورہی ہے کیونکہ بوٹینکل گارڈن ایک بین الاقوامی تسلیم شدہ ادارہ جاناجاتاہے لہذاڈی سی کایہ اقدام توہین عدالت کے زمرے میں آتاہے اس بناء ڈی سی نوشہرہ کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی عمل میں لائی جائے ۔پشاورہائیکورٹ کادورکنی بنچ آئندہ چند روز میں توہین عدالت کی درخواست کی سماعت کرے گا۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر