بونیر ،منبر ومحراب کے دعویداروں نے انصاف کی دھجیاں اڑا دیں

بونیر ،منبر ومحراب کے دعویداروں نے انصاف کی دھجیاں اڑا دیں

بونیر (ڈسٹرکٹ رپورٹر )تحصیل کونسل ڈگر کے اپوزیشن سے تعلق رکھنے والے کونسلران نے جمعیت علماء اسلام کے ناظم اور نائب ناظم پر اے ڈی پی میں انہیں نظر انداز کرنے اپنے چار یو نین کونسلوں کے لئے اٹھ کروڑ 22 لاکھ فروپے فنڈز مختص کرنے جبکہ اپوزیشن کے چھ یو نین کونسلوں کے لئے 2 کروڑ 22 لاکھ روپے فنڈز مختص کرنے کے خلاف شدید احتجاج کرتے ہوئے کہاہے کہ ممبر اور محراب کے دعویدار جے یو ائی کے تھصیل ناظم نے ان سے تحصیل کونسل میں حزب اختلاف اور حزب اقتدار کے تصور کے خاتمے کے وعدے سے انخراف کرتے ہوئے اپوزیشن ممبران کو یکسر نظر انداز کردیاہے جس کے خلاف انہوں نے وزیر بلدیات سمیت صوبائی اور ضلعی حکومت کے اعلی حکام سے رابطے کئے ہیں ،لیکن تاحال کو ئی پیش رفت نہیں ہوئی ۔انہوں نے کہا کہ مذکورہ اے ڈی پی کو واپس نہ لینے کی صورت میں عوام کیساتھ مل کر شدید احتجاج کے ساتھ ساتھ استعفو ں کی دھمکی دی ہیں ۔ان خیالات کا اظہار اپوزیشن لیڈر صاحب ذادہ اشفاق احمد ،شیرین خان ،ضیاء الرحمان ،نظام الملک خان ،شوکت خان اور ڈاکٹر عبداللہ نے بونیر پریس کلب میں ایک پر ہجوم پریس کانفرنس کے دورا ن کیا ،انہوں نے کہا کہ ہمیں قوم نے اپنے مسائل کے حل کے لئے منتحب کئے ہیں او ر اگر ہمارے ساتھ اس قسم کا رویہ جاری رہا تو پھر ہمیں اس ایوان میں بھیٹنے کا کو ئی فائدہ نہیں انہوں نے کہا کہ تحصیل ناظم نے انہیں کی فنڈز سے انہیں کے یو نین کونسلوں میں اپنے ہی پارٹی کے غیر منتحب افراد کے ناموں سے سکمیں منظور کرواکر بلدیاتی ایکٹ اور قانون کی دجھیاں اڑائی ہیں ،جس کے خلاف ہم اخری حد تک جائیں گے ۔اپوزیشن ممبران نے کہا کہ اے ڈی پی میں حکومتی اراکین کے لئے ایک کروڑ 43 لاکھ روپے فنڈز جبکہ اپوزیشن ممبران کے لئے 65 لاکھ روپے مختص کئے تھے ۔مگر ناظم نے اپنے اختیارت کا غلط استعمال کرتے ہوئے اپوزیشن ممبران کے لئے صرف 37 لاکھ روپے فنڈز مختص کرنے کی سازش کی ہے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر