تنخواہوں کی عدم ادائیگی،داعش میں غیر ملکی جنگجوﺅں کی شمولیت میں کمی ہوگئی

تنخواہوں کی عدم ادائیگی،داعش میں غیر ملکی جنگجوﺅں کی شمولیت میں کمی ہوگئی
تنخواہوں کی عدم ادائیگی،داعش میں غیر ملکی جنگجوﺅں کی شمولیت میں کمی ہوگئی

  

بغداد(مانیٹرنگ ڈیسک) عراق اور شام میں سرگرم شدت پسند تنظیم داعش کو برا جھٹکا لگ گیا۔عالمی سطح پر اس کے حامیوں کی تعداد میں نمایاں کمی ہو گئی۔ اثاثہ جات ،ریونیو اورپیٹرول کی قیمتوں میں کمی اور مسلسل ایک سال سے شدید حملوں کا شکار داعش اپنے جنگجوﺅں کو تنخواہیں دینے کے قابل نہ رہی جس کی وجہ سے بیرون ملک سے آکراس شدت پسند تنظیم کیلئے لڑنے والوں کی تعداد میں نمایاں کمی ہو گئی ہے۔

عراق میں متعین امریکی فوج کے سینئر جنرل نے اپنی وزارت دفاع ’’پینٹا گان‘‘ کو بتایا ہے کہ عراق اور شام میں فعال عسکریت پسند تظیم داعش‘ میں شامل ہونے والے غیر ملکیوں کی تعداد میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے۔ میجرجنرل پیٹر گیرسٹن کے مطابق جب وہ ایک سال قبل عراق تعینات کیے گئے تھے تواس تنظیم میں ماہانہ پندرہ سو سے دو ہز ار غیر ملکی انتہا پسند شامل ہو رہے تھے۔ امریکی جنرل کے مطابق عسکری تنظیم کے خلاف ایک سالہ لڑائی کے بعد غیر ملکی فائٹرز کی تعداد میں کمی ہوئی ہے اور ماہانہ صرف دو سو کے قریب شامل ہو رہے ہیں۔

مزید : بین الاقوامی